Saturday , August 19 2017
Home / شہر کی خبریں / شوگر کے مریضوں کو روزہ رکھنے سے صحت میں بہتری : ڈاکٹر ایس اے مجید

شوگر کے مریضوں کو روزہ رکھنے سے صحت میں بہتری : ڈاکٹر ایس اے مجید

معمولی احتیاط اور غذائی تبدیلیوں سے روزہ کے فریضہ کی ادائیگی ممکن : ماہر ذیابیطس کا بیان
حیدرآباد۔25مئی (سیاست نیوز) ماہ رمضان المبار ک کے روزوں کے اہتمام میں کسی قسم کی غفلت نہیں کر نی چاہئے بلکہ اس ماہ مبارک کے دوران عبادتوں کا جو موقع حاصل ہوتا ہے اس سے استفادہ کرتے ہوئے بھرپور عبادتیں کرنی چاہئے لیکن حالیہ عرصہ میں یہ دیکھا جانے لگا ہے کہ ذیابیطس اور دیگر عوارض میںمبتلاء افراد روزوں کے اہتمام سے گریز کر رہے ہیں اورناسازی صحت کا عذر پیش کر رہے ہیںلیکن ماہرین ذیابیطس کا کہنا ہے کہ ماہ رمضان المبار ک کے دوران معمولی احتیاط اور غذائی تبدیلیوں کے ذریعہ روزہ رکھنے کا فریضہ ادا کیا جا سکتا ہے ۔ ڈاکٹر ایس اے مجید ماہر ذیابیطس و ڈائریکٹر شفاء ہاسپٹل نے بتایا کہ شوگر کے مریضوں کے لئے روزہ رکھنا کوئی مشکل نہیں ہے بلکہ روزہ رکھنے سے انسانی نظام جسمانی کی پاکی اورصحت میں بہتری پید ہوتی ہے۔ انہوں نے بتایا کہ شوگر کے مریضوں کو روزہ رہنے کیلئے کم چکناہٹ والی غذائیں استعمال کرنے کو ترجیح دینی چاہئے اور زیادہ سے زیادہ پانی کا استعمال کیا جانا چاہئے۔ انہوں نے کہا کہ زیادہ چکنائی والی غذاؤں کے استعمال سے شوگر کے مریض روزہ کے سبب تکالیف میں مبتلاء ہوتے ہیں اگر شوگر کے مریض غذائی عادات میں تبدیلی لاتے ہوئے کم چکنائی والی غذاؤں کے ساتھ ریشہ دار غذائیں استعمال کرنے لگتے ہیں تو ایسی صور ت میں نہ صرف روزہ کا فرض ادا ہوگا بلکہ صحت میں بہتری نمایاں محسوس کی جا سکے گی۔ ڈاکٹر ایس اے مجید نے بتایا کہ روزہ دار کو سحر کے وقت 4تا5لیٹر پانی کے استعمال میں کوتاہی نہیں کرنی چاہئے اور اسی طرح زیرہ کا پانی‘ چھانچ یا گرین ٹی کے استعمال میں اضافہ کرنے سے نقاہت پیدا نہیں ہوگی اور جسمانی قوت میں اضافہ ہوگا۔ انہوں نے بتایاکہ غذا میں تفاوت کی برقراری کے لئے ضروری ہے کہ غذائی عادات میں تبدیلی لائی جائے۔ڈاکٹر ایس اے مجید نے کہا کہ دال‘ شکر‘ چکنائی والی اشیاء ‘ سیب وغیرہ سے شوگر کے مریضوں کو اجتناب کرنا چاہئے کیونکہ ان اشیاء کا استعمال انہیں روزوں کو گراں بنا سکتا ہے۔انہوں نے بتایا کہ ہائی شوگر رکھنے والے مریضوں کو چاہئے کہ وہ رمضان کے آغاز سے قبل اپنے معالج سے مشورہ کرلیںا ورشوگر کے مریض جو روزہ رہتے ہیں انہیں دھوپ کے وقت گھر سے نکلنے سے اجتناب کرنا چاہئے کیونکہ دھوپ میں نکلنے سے جسم سے پسینہ کے ذریعہ جو مادہ خارج ہوتا ہے اس سے کمزوری پیدا ہونے لگتی ہے جو کہ انتہائی تکلیف دہ ثابت ہوتی ہے اسی لئے یہ ضروری ہے کہ روزہ رہنے سے گریز کرنے کے بجائے احتیاط اور غذائی تبدیلیوں کے ساتھ فرض کی ادائیگی پر توجہ دی جائے۔مولانا محمد فاروق پاشاہ قادری خطیب و امام مسجد نور سینک پوری سکندرآباد نے بتایا کہ اللہ کے رسول ﷺ کا ارشاد مبارک ہے ’’روزہ رکھو صحتیاب ہوجاؤ گے‘‘ اس ارشاد مبارکہ کی روشنی میں شوگر کے مریضوں کے استدلال اور معالج کی رائے کا جائزہ لیا جائے تو یہ بات درست ہے کہ شوگر کے مریض کو روزہ رہنے سے گریز کے بجائے محتاط غذاؤں کے استعمال کے ساتھ اس اہم دینی فریضہ کی تکمیل میں کوتاہی نہیں کرنی چاہئے۔

TOPPOPULARRECENT