Friday , October 20 2017
Home / عرب دنیا / شہباز شریف کی رہائش گاہ کے قریب طالبان کا خودکش دھماکہ، 26 ہلاک

شہباز شریف کی رہائش گاہ کے قریب طالبان کا خودکش دھماکہ، 26 ہلاک

لاہور۔24 جولائی (سیاست ڈاٹ کام) پاکستانی صوبہ پنجاب کے چیف منسٹر شہباز شریف کی رہائش گاہ اور اس سے منسلک دفتر کے قریب ایک طاقتور دھماکے میں بشمول ملازمین پولیس کم سے کم 26 افراد ہلاک اور دیگر 58 زخمی ہوگئے ہیں۔ لاہور پولیس سربراہ کیپٹن (ریٹائرڈ) امین وائنس نے توثیق کی کہ یہ خودکش حملہ تھا اور پولیس اصل نشانہ تھی۔ انہو ںنے بتایا کہ خودکش بمبار موٹر سائیکل پر یہاں تعینات پولیس چوکی کے قریب پہنچا اور خود کو دھماکہ سے اڑالیا۔ انہوں نے بتایاکہ تقریباً 26 افراد بشمول 9 ملازمین پولیس ہلاک اور 58 دیگر زخمی ہوگئے۔ ریسکیو 1122 کی دیبا شہناز نے کہا کہ ’’پولیس اور لاہور ڈیولپمنٹ اتھاریٹی کے عہدیدار عارفہ کریم ٹاور کے باہر چیف منسٹر کے ماڈل ٹائون ریسیڈنس کے قریب غیر مجاز قبضوں کی برخاستگی میں مصروف تھے کہ طاقتور دھماکہ ہوا‘‘۔ وزیراعظم نواز شریف کے بھائی شہباز شریف دھماکہ کے وقت اپنے ماڈل ٹائون آفس میں ایک اہم اجلاس میں مصروف تھے۔ ابتداء میں وزیر داخلہ چودھری نثار علی خان نے مہلوکین کی تعداد 14 بتائی تھی۔ دیبا شہناز نے کہا کہ راحت و بچائو مہم میں مصروف ٹیموں نے زخمیوں کو دواخانوں سے رجوع کیا ہے اور تمام دواخانوں میں ہنگامی حالات کا اعلان کردیا گیا ہے جہاں کئی زخمیوں کی حالت تشویشناک بتائی گئی ہے۔ پاکستان کا تہذیبی ثقافتی صدر مقام لاہور حالیہ برسوں کے دوران متعدد دہشت گرد حملوں کا نشانہ بنتا رہا ہے۔ حالیہ عرصہ کے دوران لاہور اور دیگر مقامات پر پرتشدد واقعات پیش آچکے ہیں ۔ تحریک طالبان پاکستان نے اس حملے کی ذمہ داری قبول کی ہے۔ تحریک کے ترجمان محمد خراسانی نے ایک بیان میں کہا کہ ہمارے خودکش اسکاڈ کے رکن فدا حسین سواتی نے موٹر سائیکل پر یہ حملہ کیا۔ ہمارا پیام یہی ہے کہ ہمارے راستے میں کوئی نہ آئے اور ہم اس سرزمین پر شریعت کو نافذ کرنا چاہتے ہیں۔ لاہور پولیس سربراہ نے بتایا کہ ابتدائی تحقیقات کے مطابق خودکش بمبار نے تقریباً 10 کیلو دھماکو مادہ استعمال کیا۔ وزیر اعظم نواز شریف اور فوجی سربراہ جنرل قمر جاوید باجوا نے اس دھماکے کی مذمت کی اور کہا کہ دہشت گردی کے خاتمہ تک لڑائی جاری رہے گی۔

TOPPOPULARRECENT