Monday , August 21 2017
Home / شہر کی خبریں / شہر میں اسٹریٹ لائٹس کہیں روشن کہیں بند

شہر میں اسٹریٹ لائٹس کہیں روشن کہیں بند

اسٹریٹ لائٹ برقی بلس میں جی ایچ ایم سی کو تقریباً دیڑھ کروڑ روپئے کی بچت
حیدرآباد ۔ 27 ۔ جولائی : ( سیاست نیوز) : گریٹر حیدرآباد میونسپل کارپوریشن نے دعویٰ کیا ہے کہ گذشتہ 3 ماہ میں اس نے برقی کی بچت کے اقدامات کرتے ہوئے اسٹریٹ لائٹس برقی بلس میں ایک کروڑ 47 لاکھ روپئے کی بچت کی ہے ۔ جب کہ دونوں شہر حیدرآباد و سکندرآباد کی مختلف بستیوں سے اسٹریٹ لائٹس کے بند اور ناکارہ رہنے کی شکایات کا سلسلہ جاری ہے ۔ جی ایچ ایم سی نے برقی صرفہ کم سے کم کرنے کے مقصد سے پرانے میٹرس بدل دئیے ہیں اور آٹو ٹائم سویچس لگائے ہیں ۔ اسٹریٹ لائٹس کے حوالہ سے برقی چارجس کی بچت کا ذکر کرتے ہوئے کمشنر جی ایچ ایم سی بی جناردھن ریڈی نے کہا کہ وہ ہر پندرہ دن بعد جائزہ اجلاس منعقد کرتے ہوئے کارپوریشن کی رقم کی بچت کے لیے روبعمل لائے جارہے اقدامات سے آگہی حاصل کررہے ہیں ۔ انہوں نے کہا کہ عہدیداروں نے ہر برقی پول پر میٹرس لگائے ہیں ناقص میٹرس تبدیل کیے گئے ہیں ۔ کمشنر بلدیہ نے کہا کہ زونل کمشنرس ڈپٹی کمشنرس اور انجینئرس سے کہا گیا ہے کہ وہ اسٹریٹ لائٹس کارکرد رکھنے کو یقینی بنانے فوری اقدامات کریں ۔ زونل کمشنرس اور ڈپٹی کمشنرس سے کہا گیا ہے کہ وہ اسٹریٹ لائٹس کے منٹنس کی نگرانی کریں ۔ دوسری طرف شہر کے مختلف علاقوں کے عوام نے الزام لگایا کہ کارپوریشن کے عہدیدار کئی ماہ سے اسٹریٹ لائٹس سویچ آن نہیں کررہے ہیں ۔ اگر کسی کالونی میں دس اسٹریٹ لائٹس موجود ہوں تو صرف 3 اسٹریٹ لائٹس آن کی جاتی ہیں ۔ کئی ماہ سے بند پڑی اسٹریٹ لائٹس کو چالو کرنے کے لیے کوئی اقدامات نہیں کیے گئے ہیں ۔ حالانکہ کئی مرتبہ توجہ دلائی جاچکی ہے ۔۔

TOPPOPULARRECENT