Tuesday , August 22 2017
Home / شہر کی خبریں / شہر میں املی اور نیم کے درخت لگانے کا مشورہ

شہر میں املی اور نیم کے درخت لگانے کا مشورہ

کمزور جڑ والے درخت ہوا سے اکھڑ جاتے ہیں ، ماہرین کے تاثرات
حیدرآباد ۔ 23 ۔ مئی : ( سیاست نیوز ) : گریٹر حیدرآباد میونسپل کارپوریشن نے گذشتہ جمعہ کو حیدرآباد میں تیز ہوائیں چلنے اور بارش کے دوران گرے درختوں کی گنتی مکمل کرلی اور جی ایچ ایم سی کا عملہ ہنوز راستوں میں گرے درختوں کو ہٹانے کے کام میں مصروف ہے ۔ سریندر موہن اڈیشنل کمشنر جی ایچ ایم سی کے مطابق تقریبا ایک ہزار گرے ہوئے درخت راستے سے ہٹا دئیے گئے ہیں بتایا گیا کہ جی ایچ ایم سی زون میں جملہ ایک ہزار 355 درخت گر پڑے ۔ سریندر موہن نے بتایا کہ جوبلی ہلز ، بنجارہ ہلز ، مانصاحب ٹینک اور ساوتھ زون کے بعض علاقوں میں زیادہ درخت جڑ سے اکھڑ گئے ۔ ڈائرکٹر حیدرآباد اربن لیاب اننت ماری نکیتن نے کہا کہ ہمیں یہ معلوم کرنے کی ضرورت ہے کہ جوبلی ہلز اور بنجارہ ہلز میں اتنی بڑی تعداد میں درخت کیوں گرے اور رام چندرا پورم یا دوسرے علاقوں میں درخت کیوں نہیں گرے ۔ شہری علاقوں میں ہوا کی نوعیت بدل رہی ہے اور اس کی حیثیت مقامی ہورہی ہے ۔ اونچی عمارتوں سے غالباً ہوا کا رخ بدل رہا ہے اس کا جائزہ لینے کی ضرورت ہے ۔ آندھرا پردیش بائیو ڈائیورسٹی بورڈ کے سابق صدر نشین آر ہمپیا نے کہا کہ جی ایچ ایم سی اور محکمہ جنگلات تیزی سے پروان چڑھنے والے درخت اگا رہے ہیں ۔ جن کی جڑیں مضبوط نہیں ہوتیں اور ایسے درخت تیز ہواؤں سے آسانی سے اکھڑ جاتے ہیں ایسے درخت لگانے کا کوئی فائدہ نہیں ہے ۔ اس کے بجائے نیم اور املی کے درخت لگائے جائیں جو پرندوں کے لیے تک فائدہ مند ہیں ۔۔

TOPPOPULARRECENT