Friday , August 18 2017
Home / شہر کی خبریں / شہر میں تنہا زندگی گذارنے والی خواتین کی کم تعداد پر حیرت

شہر میں تنہا زندگی گذارنے والی خواتین کی کم تعداد پر حیرت

حکومت کی وظائف اسکیم میں حیدرآباد سے صرف 5 ہزار 28 درخواستوں کا ادخال
حیدرآباد۔یکم۔جون(سیاست نیوز) شہر حیدرآباد میں تنہاء زندگی گذارنے والی خواتین کی کم تعداد نے نہ صرف حکومت کو بلکہ عہدیداروں کو بھی حیرت میں مبتلاء کردیا ہے۔ حکومت تلنگانہ کی جانب سے ریاست میں تنہاء خواتین کو وظائف کی اجرائی کے اعلان کے بعد جو درخواستیں وصول کی گئی ہیں ان کی تعدادشہر حیدرآباد میں صرف 5ہزار 28ہے ۔ ضلع حیدرآباد کے 16منڈلوں میں سرکاری اعداد و شمار کے مطابق جہاں آبادی 75لاکھ ہے ان ںمے صرف 5028ایسی خواتین کی نشاندہی کی گئی ہے جو تنہاء زندگی گذار رہی ہیں۔ چیف منسٹر مسٹر کے چندر شیکھر راؤ کی جانب سے معلنہ اسکیم کے مطابق تنہاء زندگی گذارنے والی خواتین کو ماہانہ 1000 روپئے وظیفہ کی اجرائی عمل میں لائی جائے گی اور جاریہ ماہ کے پہلے ہفتہ سے ان خواتین کو بینک کھاتوں کے ذریعہ رقومات روانہ کرنے کا عمل شروع کردیا جائے گا۔ بتایا جاتا ہے کہ دونوں شہروں سے موصولہ ان درخواستوں کے علاوہ ضلع رنگا ریڈی سے 7500تنہاء خواتین کی نشاندہی عمل میںلائی گئی ہے جنہیں اس اسکیم کے تحت رقومات کی اجرائی عمل میں لائی جائے گی۔ تفصیلات کے مطابق عنبر پیٹ منڈل سے 401خواتین کا انتخاب عمل میں لایا گیا ہے جبکہ امیر پیٹ منڈل سے 77خواتین کو منتخب کیا گیا ہے اسی طرح آصف نگر منڈل سے 513خواتین کو منتخب کیا گیا ہے جبکہ بہادر پورہ منڈل سے 419خواتین منتخب کی گئی ہیں۔ بندلہ گوڑہ منڈل سے 394چارمینار منڈل سے 173خواتین کو منتخب کیا گیا ہے۔ گولکنڈہ منڈل سے 127خواتین منتخب کی گئی ہیں۔ حمایت نگر منڈل سے 251‘ خیریت آبادسے 379‘ ماریڈ پلی سے 353‘ مشیر آباد سے 513‘ نامپلی سے 294‘ سعید آبادسے 215‘ سکندرآباد منڈل سے 428‘ شیخ پیٹ منڈل سے 245اور ترملگیری منڈل سے 246خواتین کو منتخب کیا گیا ہے۔بتایاجاتا ہے کہ تمام منظورہ درخواست گذاروں کی فہرست آسرا ویب سائٹ پر جاری کردی جائے گی اور اس کے بعد منظورہ رقومات کی اجرائی کے لئے پوسٹ آفس میں کھاتہ اور پاس بک کی اجرائی عمل میں لائی جائے گی اوران کھاتوں میں رقومات کی الکٹرانک منتقلی عمل میں لائی جائے گی اور ان رقومات کی اجرائی اور منہائی میں کوئی خرد برد نہ ہو اس کے لئے بائیومیٹرک منہائی نظام رکھا جائے گا۔ عہدیداروں کے مطابق اس اسکیم سے استفادہ کیلئے منتخب کئے جانے والی خواتین کو دو زمروں میں رکھا گیا ہے ۔ 18 سال سے زائد عمر کی وہ خواتین جن کے شوہروں نے انہیں تنہاء چھوڑ رکھا ہے اور ایک برس کے دوران ان کے درمیان کوئی تعلق نہیں رہاہے یا پھر شہری علاقوں میں 35سال عمر کی وہ خواتین جو شادی شدہ نہیں ہیں اور دیہی علاقوں میں یہ حد عمر 30سال رکھی گئی ہے۔

TOPPOPULARRECENT