Saturday , September 23 2017
Home / شہر کی خبریں / شہر میں غیر مجاز بورویلس مہربند، واٹر ٹینکرس کی ضبطی

شہر میں غیر مجاز بورویلس مہربند، واٹر ٹینکرس کی ضبطی

پانچ ہزار لیٹر پانی کی قیمت کہیں900 کہیں 1200  سو روپئے
حیدرآباد 22 مارچ (سیاست نیوز) حیدرآباد ضلع کلکٹریٹ نے صارفین کو پانی کی سربراہی کے لئے شہر کے بورویلس کا استعمال کرنے گریٹر حیدرآباد میونسپل کارپوریشن کو ایک پلان پیش کیا جارہا ہے جس کا مقصد پرائیوٹ واٹر ٹینکر مالکین کو غیر مجاز بورویلس کا غلط استعمال کرنے سے روکنا ہے۔ تجاویز ایک ہفتہ قبل پیش کی جاچکی ہیں جن پر ہنوز کوئی کارروائی نہیں ہوئی ہے۔ حیدرآباد ضلع کلکٹریٹ کے حکام نے گولکنڈہ کے قریب تقریباً دس غیر قانونی بورویلس کا پتہ چلایا اور انھیں مہربند کردیا گیا۔ خانگی ٹینکر مالکین ان بورویلس سے غیر مجاز طور پر پانی حاصل کررہے تھے۔ دھاوے کے بعد تقریباً 15 ٹینکرس ضبط کئے گئے۔ مقامی عوام نے عہدیداروں پر برہمی ظاہر کی اور کہاکہ انھیں اپنے علاقوں میں بلدیہ کی طرف سے کوئی پانی نہیں مل رہا ہے۔ حیدرآباد کلکٹریٹ کے ایک عہدیدار نے کہاکہ والٹا ایکٹ کے تحت بورویلس کے خانگی استعمال کی اجازت نہیں ہے۔ 15 ٹینکرس ضبط کئے گئے ہیں دس ہزار روپئے جرمانہ لگایا گیا ہے۔ عوام نے اس اقدام کی مخالفت کی۔ گرما میں گھروں تک بورویلس کا پانی پہونچانے کے لئے حیدرآباد کے سوا تلنگانہ کے تمام اضلاع میں پرائیوٹ بورویلس کرائے پر حاصل کئے گئے ہیں چونکہ موسم گرما میں فصل نہیں اُگائی جاتی اس لئے اضلاع میں گھروں کو پانی کا سربراہی کا کوئی مسئلہ نہیں ہے۔ ماہانہ پانچ ہزار تا 8 ہزار روپئے کرایہ پر بورویلس حاصل کئے گئے ہیں۔ گریٹر حیدرآباد میونسپل کارپوریشن اور حیدرآباد واٹر ورکس کو مشورہ دیا گیا ہے کہ اضلاع کی طرح شہر میں بھی بورویلس کرائے پر حاصل کرتے ہوئے پانی کی سربراہی کی جاسکتی ہے۔ حیدرآباد میں زیادہ تر غیر مجاز بورویلس گولکنڈہ علاقہ میں ہیں جو موسیٰ ندی کے قریب ہے والٹا قانون کے تحت ضلع نظم و نسق کے بغیر کوئی بورویلس کی کھدائی نہیں کرسکتا۔ اجازت بھی گراؤنڈ واٹر محکمہ کی طرف سے پانی کی سطح کا جائزہ لینے کے بعد ہی دی جاتی ہے۔ اس وقت حیدرآباد اور سکندرآباد میں پانی کی قلت سے دوچار علاقوں میں پرائیوٹ واٹر ٹینکر پانچ ہزار لیٹر پانی پر نو سو روپئے تا 12 سو روپئے وصول کررہے ہیں۔

Top Stories

TOPPOPULARRECENT