Tuesday , October 17 2017
Home / شہر کی خبریں / شہر میں پولیس کی اچانک تلاشی مہم ، شہریوں میں خوف کا ماحول

شہر میں پولیس کی اچانک تلاشی مہم ، شہریوں میں خوف کا ماحول

6 ڈسمبر کے پیش نظر احتیاطی اقدامات کے طور پر بندوبست کرنے پولیس کے اعلی عہدیداروں کا دعوی
حیدرآباد /24 نومبر ( سیاست نیوز ) شہر حیدرآباد میں اچانک چوکسی اور پولیس کی تلاشی مہم سے شہریوں میں خوف و ہراس پھیل گیا ۔ شہر کے جنوبی زون پرانے شہر کے علاوہ سنٹرل زون میں آج پولیس اچانک کثیر تعداد میں سڑکوں پر نکل آئی ۔ جگہ جگہ تلاشی اور گشت سے شہریوں میں خوف کا ماحول پیدا ہوگیا اور اس تلاشی سے شہریوں نے مشکلات کی شکایت کی ہے ۔ پولیس کے اعلی عہدیداروں کا کہنا ہے کہ حیدرآباد کو کسی قسم کا کوئی خطرہ یا خوف نہیں ہے تاہم احتیاطی طور پر اقدامات کئے جارہے ہیں ۔ دوسری طرف 6 ڈسمبر کی آمد کے پیش نظر پولیس کے سخت انتظامات کئے جارہے ہیں ۔ تاہم پولیس کے عہدیدار کسی قسم کی کوئی اہم وجہ کا تذکرہ نہیں کر رہے ہیں ۔ باوجود اس کے احتیاطی اقدامات سے عوام میں تشویش پائی جاتی ہے ۔ کل رات پرانے شہر میں کارڈن سرچ تلاشی مہم کے بعد آج بھی یہ سلسلہ جاری رہا ۔ جبکہ سنٹرل زون کے علاقہ میں پولیس نے وسیع تر اقدامات کرتے ہوئے ایک وقت میں 27 مقامات پر تلاشی مہم کا آغاز کیا ۔ پولیس کی سخت چوکسی اور وسیع تر انتظامات اور شہر بھرمیں کیمروںکی موجودگی کے باوجود رہزنی کی وارداتوں کا پیش آنا تشویش کا باعث بنا ہوا ہے ۔ پولیس کی کارکردگی کو تنقید کا نشانہ بنی ہوئی ہے ۔ اس خصوص میں ڈپٹی کمشنر آف پولیس سنٹرل زون مسٹر وی بی کملاسین ریڈی نے بتایا کہ سٹی پولیس کمشنر کی خصوصی ہدایت پر اقدامات کئے جارہے ہیں ۔ انہوں نے بتایا کہ سنٹرل زون کے حدود میں شام 5 تا شب 8 بجے تک خصوصی مہم جاری رہی ۔ انہوں نے بتایا کہ 27 مقامات پر ایک ہی وقت مہم کا آغاز ہوا ۔ ہر پولیس اسٹیشن کے تحت تین ٹیموں کی تشکیل دی گئی تھی اور کل 75 مقامات کا احاطہ کیاگیا ۔ ایک مقام سے دوسرے مقام پر منتقل ہوئے منصوبہ بند طریقہ سے مہم کو منعقد کیا گیا ۔ انہوں نے بتایا کہ بڑے شاپنگ مالس ، ٹرافک جنکشن ، ریلوے اسٹیشن ، بس اسٹیشن ، ہوٹلس ، مساجد منادر و دیگر عبادت گاہوں ، تفریحی مقامات پر تلاشی مہم جاری رہی ۔ ڈی سی پی سنٹرل زون نے بتایا کہ اس تلاشی مہم کے دوران سیکوریٹی میں لاپرواہی کا مظاہرہ کرنے والے اداروں کو نوٹس جاری کی گئی ہے ۔ رتناگیری سوپر مارکٹ اور آر کے تھیٹر کی سیکوریٹی میں خامیاں پائی گئیں جو خطرناک ثابت ہوسکتی ہیں ۔ پولیس نے ان اداروں کو پابند کردیا ہے کہ آئندہ کسی بھی قسم کی کو تاہی کے خلاف سخت اقدامات کئے جائیں گے ۔ ڈی سی پی کملاسین ریڈی نے بتایا کہ بغیر دستاویزات کے گاڑیاں چلانے والوں کے خلاف کارروائی کی گئی اور کئی گاڑیوں کو ضبط کرلیاگیا ۔ انہوں نے بتایا کہ رام گوپال پیٹ پولیس حدود میں دو افراد کو حراست میں لے لیا گیا جو 16 لاکھ اور 9 لاکھ روپئے لیکر گھوم رہے تھے ۔ ان کے یہاں رقم کے تعلق سے تفصیلات نہیں تھیں ۔ جن کی انکوائری جاری ہے ۔ جبکہ 8 مشتبہ افراد کو حراست میں لے لیا گیا ہے ۔ انہوں نے بتایا کہ عوام کو خوف و ہراس کی کوئی ضرورت نہیں اور نہ ہی حیدرآباد کیلئے کوئی خطرہ ہے ۔ چونکہ مالی اور پیرس میں دہشت گردانہ  کارروائی کے پیش نظر اس طرح کے احتیاطی اقدامات کئے جارہے ہیں ۔ انہوں نے شہریوں کو اطمینان دلایا کہ کسی قسم کے خوف کی ضرورت نہیں چونکہ حیدرآباد پولیس عوام کے ساتھ ہے ۔

TOPPOPULARRECENT