Friday , August 18 2017
Home / شہر کی خبریں / شہر میں پینے کے پانی کی سربراہی کا موقف بہتر ہوگا

شہر میں پینے کے پانی کی سربراہی کا موقف بہتر ہوگا

ناگر جنا ساگر میں پانی چھوڑا جائے گا ، مانجرا اور حمایت ساگر خشک ، عثمان ساگر میں برائے نام پانی
حیدرآباد ۔ 9 ۔ اگست : ( سیاست نیوز ) : گرما کی شدت اور آبی ذخائر خشک رہنے کے طویل عرصہ کے بعد حیدرآباد شہر کے لیے پینے کے پانی کی سربراہی کے حوالہ سے یہ خوشخبری ہے کہ دریائے کرشنا میں پانی کا بہاؤ کافی بڑھ گیا ہے اور صورتحال اطمینان بخش ہے ۔ حیدرآباد میٹرو پولیٹن واٹر سپلائی اینڈ سیوریج بورڈ نے اطمینان کی سانس لی ہے کہ سری سیلم میں پانی کی مقدار کافی بڑھ گئی ہے اور توقع ہے کہ آئندہ دو دن میں سری سیلم سے تقریبا 94 ٹی ایم سی فٹ پانی ناگر جنا ساگر میں چھوڑا جائے گا ۔ اور یہ سلسلہ ایک سال تک جاری رہے گا ۔ سری سیلم میں پانی کی سطح دس دن قبل صرف 809 فٹ تھی جو اب بڑھ کر 857 اعشاریہ 6 فٹ ہوگئی ہے ۔ لیکن تلنگانہ میں معمول سے زیادہ بارش ہونے کے باوجود سنگور مانجرا اور حمایت ساگر اور عثمان ساگر میں جو شہر کے لیے پانی کی سربراہی کے تاریخی ذخائر ہیں پانی کی سطح میں کوئی تبدیلی نہیں ہوئی ہے ۔ شہر میں اب تک بارش معمول سے سات فیصد زیادہ ہوئی ہے جب کہ رنگاریڈی ضلع میں 12 فیصد زائد بارش ہوئی ہے ۔ عثمان ساگر ذخیرہ آب میں محض صفر اعشاریہ صفر چھ نو ٹی ایم سی فٹ پانی جمع ہوا ہے جب کہ گنجائش 3 اعشاریہ 9 ٹی ایم سی فٹ پانی کی ہے ۔ حمایت ساگر میں تو پانی بالکل جمع نہیں ہوا ۔ رنگاریڈی ضلع کے وقار آباد منڈل کے آبگیر علاقوں میں بارش کے باوجود صورتحال تبدیل نہیں ہوئی ہے ۔ مانجرا ندی پوری طرح خشک ہے ۔ سنگور آبی ذخیرہ میں محض 6 اعشاریہ 5 ٹی ایم سی فٹ پانی جمع ہے جب کہ گنجائش تیس ٹی ایم سی فٹ کی ہے ۔ شہر کو اس وقت پانی کی سربراہی کرشنا مرحلہ ایک دو تین اور گوداوری مرحلہ ایک پراجکٹ سے ہورہی ہے ۔۔

TOPPOPULARRECENT