Wednesday , August 23 2017
Home / شہر کی خبریں / شہر کو پاک صاف بنانے کے دعوؤں کے باوجود ہرطرف گندگی

شہر کو پاک صاف بنانے کے دعوؤں کے باوجود ہرطرف گندگی

اہم علاقوں میں کچرے کے انبار‘ اعلیٰ عہدیداروں کی ہدایات نظرانداز‘ عوام کو دشواری
حیدرآباد۔14 مارچ ( سیاست نیوز) شہر میں کچرے کی منتقلی اور صفائی کے مثالی اقدامات کے دعوے کئے جارہے ہیں ‘ وہیں دوسری طرف خود بلدیہ کے عہدیدار اپنی لاپرواہی کو جاری رکھے ہوئے ہیں ۔ کمشنر بلدیہ صفائی کے متعلق اقدامات میں شہریوں کے تعاون پر زور دے رہے ہیں تو دوسری طرف خود ان کے ماتحت عہدیداروں کو ایسا لگتا ہے کہ صفائی مہم سے دلچسپی نہیں جس کی مثال علاقہ بیگم بازار میں دیکھی جاسکتی ہے ۔ چوڑی بازار علاقہ میں واقعہ قدیم و معروف درگاہ کے قریب بلدی عہدیداروں کی لاپرواہی کا ثبوت دیکھا جاسکتا ہے ۔ بارہا شکایتوں اور توجہ دہانی کے باوجود سرکل نمبر پانچ کا عملہ اس جانب توجہ مرکوز کرنے سے گریز کررہا ہے ۔ کاروباری اداروں اور مقامی عوام کے مکانات کا کچرہ درگاہ کے قریب پھینکا جاتا ہے جو نہ صرف گندگی بلکہ تکلیف کا سبب بن گیا ہے ۔ اس موقع پر مقامی شخص راجن بھائی جو کہ اس علاقہ میں دیکھ بھال کا کام کرتے ہیں نے بتایا کہ ایک طویل عرصہ سے علاقہ میں گندگی پر اعتراض کررہے ہیں اور عہدیداروں کی توجہ اس جانب مبذول کروا رہے ہیں تاہمبلدی عہدیداروں کے اقدامات نہ کے برابر ہے ۔ انہوں نے بتایا کہ درگاہ کے قریب ایک کھلی اراضی ہے جہاں مقامی عوام کی جانب سے کچرہ ڈالا جاتا ہے اور صفائی چار دن میں ایک مرتبہ اور کبھی ہفتہ میں ایک مرتبہ بھی نہیں ہوئی جس کے سبب شدید تکلیف کا سامنا ہے ۔ انہوں نے بتایا کہ اخبارات اور میڈیا میں کمشنر بلدیہ کی جانب سے صفائی سوچھ حیدرآباد اور عام مقامات پر کچرہ ڈالنے کے خلاف اقدامات کے دعوے کئے جارہے ہیں لیکن اقدامات اس کے برعکس دکھائی دے رہے ہیں ۔ انہوں نے کمشنر بلدیہ سے اس جانب توجہ مبذول کرنے کی درخواست کی اور صفائی کے اقدامات کو مزید بہتر بناینے کا مطالبہ کیا ۔

TOPPOPULARRECENT