Tuesday , September 26 2017
Home / شہر کی خبریں / شہر کے 219 سرکاری اسکولس کرایہ کی عمارتوں میں قائم

شہر کے 219 سرکاری اسکولس کرایہ کی عمارتوں میں قائم

نئی عمارتوں کیلئے جگہ کی نشاندہی جاری، ارکان اسمبلی کے سوال پر حکومت کا جواب
حیدرآباد 13 مارچ (سیاست نیوز) شہر میں 219 سرکاری اسکولس کرایہ کی عمارتوں میں چلائے جارہے ہیں۔ نئی عمارتوں کی تعمیر کے متعلق جائیدادوں کی نشاندہی اور جگہ کی دستیابی کا جائزہ لیا جارہا ہے۔ شہر سے تعلق رکھنے والے ارکان اسمبلی کی جانب سے اُٹھائے گئے سوال کے تحریری جواب میں اسمبلی میں یہ بات بتائی گئی۔ حکومت کی جانب سے اِس بات سے صریح انکار کیا گیا ہے کہ شہر میں چلائے جانے والے اردو میڈیم مدارس میں بنیادی سہولتیں موجود نہیں ہیں۔ علاوہ ازیں اِس بات کی بھی وضاحت کی گئی ہے کہ ریاست بھر میں موجود 1571 اردو میڈیم اسکولس میں 219 ایسے اسکولس ہیں جوکہ کرایہ کی عمارتوں میں چلائے جارہے ہیں اور تمام اسکولوں میں 25 طلبہ کے لئے ایک ٹیچر کے اعتبار سے اساتذہ موجود ہیں۔ علاوہ ازیں تمام اسکولوں میں حکومت کی جانب سے بنیادی سہولتیں فراہم کی جارہی ہیں۔ منتخبہ نمائندوں کی جانب سے اٹھائے گئے سوال میں اِس بات کا استفسار کیا گیا تھا کہ سرکاری اسکولوں میں بنیادی سہولتوں کے نہ ہونے کی اطلاع کس حد تک درست ہے اور انفراسٹرکچر کے علاوہ طلبہ کی تعداد بالخصوص مجلس بلدیہ عظیم تر حیدرآباد کے حدود میں موجود تعداد کے متعلق دریافت کیا گیا تھا اور حکومت سے خانگی عمارتوں میں چلائے جانے والے سرکاری مدارس کی تفصیلات پیش کرنے کی خواہش کی تھی اور عملہ و اساتذہ کی کمی کے متعلق تفصیلات دریافت کی گئی تھیں جس پر حکومت کی جانب سے تحریری جواب میں واضح طور پر کہا گیا کہ 219 ایسے اسکول موجود ہیں جو خانگی عمارتوں میں چلائے جارہے ہیں۔ کرایہ کی ان عمارتوں سے سرکاری مدارس کی منتقلی کے عمل کا جائزہ لیا جارہا ہے اور اس بات کی کوشش کی جارہی ہے کہ مناسب جگہ کی نشاندہی کرتے ہوئے عمارتوں کی تعمیر کو یقینی بنایا جائے۔

TOPPOPULARRECENT