Wednesday , October 18 2017
Home / سیاسیات / شیلا ڈکشت اتر پردیش میں امکانی کانگریس وزارت اعلی امیدوار

شیلا ڈکشت اتر پردیش میں امکانی کانگریس وزارت اعلی امیدوار

انتخابی حکمت عملی کی تیاری کے ماہرین کا مشورہ۔برہمن ووٹوں کی اہمیت کے پیش نظر امکان پر غور
نئی دہلی 16 جون ( سیاست ڈاٹ کام ) یہ قیاس آرائیاں آج زور پکڑ گئیں کہ دہلی کی تین مرتبہ کی چیف منسٹر شیلا ڈکشت کو آئندہ سال سیاسی اعتبار سے اہمیت کی حامل اتر پردیش میں ہونے والے اسمبلی انتخابات کیلئے پارٹی کی چیف منسٹر امیدوار کے طور پر پیش کیا جاسکتا ہے ۔ اتر پردیش کبھی کانگریس کا گڑھ سمجھا جاتا تھا تاہم اب یہاں اس کو مشکلات کا سامنا ہے ۔ کہا جا رہا ہے کہ انتخابی حکمت عملی تیار کرنے والے پرشانت کشور نے سفارش کی ہے کہ شیلا ڈکشت کو چاہئے کہ وہ ریاست میںپارٹی کی انتخابی مہم کے دوران اہم رول ادا کریں کیونکہ وہ ایک اہمیت کی حامل برہمن ہیں اور اس کے نتیجہ میں کانگریس کو یو پی میں برہمن برادری کی تائید و حمایت حاصل کرنے میں مدد مل سکتی ہے ۔ کہا جا رہا ہے کہ کئی نشستوں پر برہمن برادری کی تائید اہمیت کی حامل ہوسکتی ہے ۔ برہمن برادری کبھی کانگریس کی حامی تھی تاہم مندر ۔ منڈل سیاست کے بعدیہ بی جے پی کے حامی ہوگئے ۔ برہمن ووٹوں کی خاطر خواہ تعداد مایاوتی کی بھی حامی ہوگئی کیونکہ مایاوتی نے ماضی میں برادری کے کئی افراد کو پارٹی ٹکٹ دیا تھا ۔ امکان ہے کہ شیلا ڈکشت کانگریس صدر سونیا گاندھی سے ملاقات کر رہی ہیں۔ یہ کہا جا رہاہے کہ دہلی میں 1999 سے 2014 تک حکمرانی کرنے والی شیلا ڈکشت کو اتر پردیش کیلئے پارٹی کی چیف منسٹر امیدوار کے طورپر بھی پیش کیا جاسکتا ہے ۔ شیلا ڈکشت یو پی کے سینئر کانگریس لیڈڑ اوما شنکر ڈکشت کی دختر ہیں جنہوں نے مرکزی وزیر و گورنر کی حیثیت سے خدمات انجام دی ہیں۔ وسطی و مشرقی اتر پردیش میں برہمن برادری انتخابی نتائج پر اثر انداز ہوسکتی ہے ۔

TOPPOPULARRECENT