Wednesday , August 23 2017
Home / ہندوستان / صحافیوں کے تحفظ پر قانون سازی کی ضرورت

صحافیوں کے تحفظ پر قانون سازی کی ضرورت

حکومت کو صدرنشین پریس کونسل آف انڈیا کا مشورہ
نئی دہلی 14 مئی (سیاست ڈاٹ کام) بہار اور جھارکھنڈ میں 2 جرنلسٹوں کے قتل کی مذمت کرتے ہوئے پریس کونسل آف انڈیا نے آج یہ مطالبہ کیا ہے کہ صحافیوں کے تحفظ کو یقینی بنایا جائے اور حملہ کے کیسوں کو فاسٹ ٹریک کورٹس سے رجوع کیا جائے۔ کونسل کے صدرنشین جسٹس (ریٹائرڈ) چندرا مولی کمار پرساد نے اندرون دو یوم 2 صحافیوں کی ہلاکتوں کی مذمت کی اور کہاکہ 96 فیصد کیسوں کو منطقی انجام نہیں پہنچایا گیا۔ انھوں نے بتایا کہ یہ انتہائی سنگین معاملہ ہے کہ گزشتہ 4 ماہ کے دوران ملک میں 3 صحافیوں کو ہلاک کردیا گیا جبکہ ایک اور صحافی فرائض انجام دیتے ہوئے المناک حادثہ میں مارا گیا۔ صدرنشین پریس کونسل آف انڈیا جوکہ سپریم کورٹ کے سابق جج بھی ہیں، ایک صحافتی بیان میں حکومت ہند سے گزارش کی ہے کہ صحافیوں کے تحفظ کے لئے خصوصی قانون نافذ کیا جائے اور حملوں سے متعلق مقدمات کی عاجلانہ یکسوئی کے لئے فاسٹ ٹریک کورٹس سے رجوع کیا جائے۔ انھوں نے بتایا کہ جمعرات کے دن ایک نیوز چیانل سے وابستہ صحافی اکھلیش پرتاپ سنگھ کو جھارکھنڈ کے ضلع چھترا میں نامعلوم اشرار نے گولی مار کر ہلاک کردیا جبکہ بہار کے ضلع سیوان میں کل مسلح افراد نے دینک ہندوستان کے نیوز بیورو چیف کا قتل کردیا۔ انھوں نے کہاکہ گزشتہ سال 9 صحافیوں اور جاریہ سال 3 صحافیوں کو مارا گیا جوکہ آزادیٔ صحافت اور جمہوریت کے مفاد میں ٹھیک نہیں ہے۔ انھوں نے صحافیوں کے تحفظ پر ایک ملک گیر مہم چلانے کی تجویز بھی پیش کی ہے۔

TOPPOPULARRECENT