Sunday , August 20 2017
Home / Top Stories / صدارتی انتخابات : سماج وادی پارٹی دو گروپس میں منقسم

صدارتی انتخابات : سماج وادی پارٹی دو گروپس میں منقسم

اکھلیش یادو کی اپوزیشن امیدوار کی تائید کی ارکان اسمبلی کو ہدایت ‘ ملائم سنگھ اور شیوپال کووند کی تائید میں

لکھنو۔16جولائی ( سیاست ڈاٹ کام ) سماج وادی پارٹی ایسا محسوس ہوتا ہے کہ صدارتی انتخابات سے پہلے دو گروپس میں تقسیم ہوگئی ہے ۔ جن میں سے ایک کی قیادت پارٹی کی سرپرست ملائم سنگھ یادو کررہے ہیں جب کہ دوسرا گروپ جس کی قیادت ان کے فرزند اکھلیش یادو کررہے ہیں ۔ حریف امیدوار کی تائید میں اپنا ووٹ استعمال کرنے کیلئے تیار ہیں ‘ جس کے نتیجہ میں امکان ہے کہ کراس ووٹنگ ہوگی ۔ پارٹی میں اس تقسیم سے ممکن ہے کہ انتخابی نتیجہ پر کوئی اثر مرتب نہ ہو لیکن اس سے یقینی طور پر خاندانی کشیدگی میں مزید پیچیدگیاں پیدا ہوجائیں گی ۔ سماج وادی پارٹی کے ایک اندرون ذریعہ کے بموجب صدارتی نامزد امیدوار کے بارے میں سماج وادی پارٹی میں جاری اختلافات اُسی دن سے شروع ہوگئے ہیں جب کہ این ڈی اے نے رام ناتھ کووند کو صدارتی امیدوار نامزد کیا تھا ۔ کووند کے نام کے اعلان کے بعد ملائم سنگھ یادو نے چیف منسٹر یو پی کے اہتمام کردہ ایک عشائیہ میں شرکت کی جو وزیراعظم نریندر مودی کے اعزاز میں 20جون کو دیا گیا تھا ۔ سیاسی حلقوں میں اسے ملائم سنگھ یادو کی این ڈی اے امیدوار کو واضح تائید کے طور پر دیکھا جارہا ہے ۔ نمایاں طور پر اس عشائیہ میں اکھلیش اور مایاوتی نے شرکت نہیں کی جو اپوزیشن کے امیدوار کی تائید کررہے ہیں ۔ سماج وادی پارٹی کے سرپرست کی کووند کی تائید ایک طئے شدہ فیصلہ سمجھا جارہا ہے جو اُسی دن کرلیا گیا تھا جب کہ سماج وادی پارٹی کے سرپرست نے کووند کو ایک طاقتور امیدوار قرار دیا تھا اور شیوپال یادو نے جو اکھلیش یادو کے چچا ہے کہا تھا کہ ان کے بڑے بھائی ملائم سنگھ یادو جو بھی فیصلہ کریں گے وہ ان کیلئے حرف آخر ہوگا ۔ اس سے ظاہر ہوتا تھا کہ وہ کووند کی تائید کریں گے ۔ اپوزیشن کی امیدوار میرا کماری نے اس کے برعکس اکھلیش یادو سے سماج وادی پارٹی کے ہیڈ کوارٹرس پر جمعہ کے دن ملاقات کی ۔ بعدازاں انہوں نے صدر بی ایس پی مایاوتی سے بھی ملاقات کر کے اپنی تائید میں ووٹ دینے کی اپیل کی ۔ دلچسپ بات یہ ہے کہ شیوپال اور پارٹی کے دوسرے سینئر قائد رکن اسمبلی اعظم خان اپنی غیر حاضری کی وجہ سے افواہوں کا مرکز بن گئے ہیں ۔اکھلیش یادو نے اپنے ارکان اسمبلی کو ہدایت دی ہے کہ اپوزیشن کی امیدوار میرا کمار کی تائید میں ووٹ دیں جو سیکولر نظریہ کی علمبردار ہیں ۔ سماج وادی پارٹی کے ترجمان راجندر چودھری نے کہا کہ اکھلیش یادو نے اپنے ارکان اسمبلی کو میرا کمار کی تائید کا حکم دیا ہے ۔ چودھری نے کہا کہ سماج وادی پارٹی ارکان اسمبلی میرا کمار کی تائید میںووٹ دیں ۔ سماج وادی پارٹی کے ایک اور سینئر قائد جو سماج وادی پارٹی مقننہ پارٹی کے قائد بھی ہیں ۔ رام گوئند چودھری نے کہاکہ ہر شخص کو میرا کمار کی تائید کرنا چاہیئے۔ وہ راجیہ سبھا میں کُل جماعتی اپوزیشن قائد بھی ہیں ۔ انہوں نے تحریری اپیل کرتے ہوئے سماج وادی پارٹی ارکان اسمبلی سے میرا کمار کی تائید کی خواہش کی ہے ۔

TOPPOPULARRECENT