Friday , July 21 2017
Home / سیاسیات / صدارتی انتخاب: ناراض اپوزیشن کا 22 جون کو اجلاس

صدارتی انتخاب: ناراض اپوزیشن کا 22 جون کو اجلاس

این ڈی اے کا فیصلہ ووٹ بینک سیاست : شیوسینا ۔ مایاوتی کے موقف کا آج اعلان
نئی دہلی 19 جون ( سیاست ڈاٹ کام ) شیوسینا کو چھوڑ کر این ڈی اے شرکاء نے آج صدارتی عہدہ کے لئے رام ناتھ کووند کی نامزدگی کا خیرمقدم کیا جبکہ اپوزیشن پارٹیاں ظاہر طور پر ناراض معلوم ہوئیں اور اُنھوں نے اپنی تائید و حمایت پیش کرنے کے بارے میں تجسس برقرار رکھا اور شائد وہ کوئی مشترکہ امیدوار بھی پیش کرسکتے ہیں۔ اپنے تجویز کردہ دونوں نام آر ایس ایس سربراہ موہن بھاگوت اور نامور ماہر زراعت ایم ایس سوامی ناتھن کو مسترد کردیئے جانے پر شیوسینا سربراہ اودھو ٹھاکرے نے کہاکہ دلت امیدوار محض ووٹ بینک سیاست کی بناء منتخب کیا گیا ہے۔ شیوسینا 71 سالہ کووند کو اپنی تائید کے تعلق سے قطعی فیصلہ کل کرے گی۔ تاہم کانگریس نے اپنے انتخاب کے بارے میں اتفاق رائے کے لئے بی جے پی کی اپیل ٹھکرادی اور کہاکہ اپوزیشن 22جون کو میٹنگ کے بعد یہ الیکشن لڑنے کے بارے میں کوئی فیصلہ کرے گی۔ کانگریس لیڈر غلام نبی آزاد نے حکومتی اعلان کے فوری بعد کہاکہ بی جے پی نے یکطرفہ فیصلہ کرلیا ہے۔ بائیں بازو جماعتوں کے ذرائع نے کہاکہ اپوزیشن ہوسکتا ہے مشترکہ امیدوار پیش کرے اور اِس مسئلہ پر 22 جون کی میٹنگ میں غور و خوض کیا جائے گا۔ سابق اسپیکر لوک سبھا میرا کمار، سابق مرکزی وزیرداخلہ سشیل کمار شنڈے، بھاریپا بہوجن مہا سنگھ لیڈر اور ڈاکٹر بی آر امبیڈکر کے پوتے پرکاش یشونت اور ریٹائرڈ سفارت کار گوپال کرشنا گاندھی چند نام ہیں جن پر اپوزیشن پارٹیاں غور کررہی ہیں۔ سی پی آئی نیشنل سکریٹری ڈی راجہ نے کہاکہ بی جے پی کے پیانل نے اُنھیں پیشگی کوئی نام سے واقف نہیں کرایا تھا۔ ترنمول کانگریس کی سربراہ ممتا بنرجی نے کووند کی امیدواری کے تعلق سے اپنی پارٹی کے تحفظ کا عملاً اظہار کرتے ہوئے کہاکہ اُنھیں محض اِس لئے نامزد کیا گیا کیوں کہ وہ ماضی میں بی جے پی کے دلت مورچہ لیڈر رہے ہیں۔ سی پی آئی (ایم) جنرل سکریٹری سیتارام یچوری نے بھی کہاکہ بی جے پی کا فیصلہ یکطرفہ ہے۔ این سی پی بھی 22 جون کی میٹنگ میں حصہ لے گی۔ لکھنؤ میں بی ایس پی سربراہ مایاوتی نے کہاکہ اُن کی پارٹی اِس نامزدگی پر مثبت موقف رکھتی ہے لیکن وہ اپنے موقف کا کل اعلان کریں گی۔

Leave a Reply

TOPPOPULARRECENT