Tuesday , September 26 2017
Home / شہر کی خبریں / صدر نشین اقلیتی مالیاتی کارپوریشن کی حصول جائزہ تقریب میں شاہ خرچی

صدر نشین اقلیتی مالیاتی کارپوریشن کی حصول جائزہ تقریب میں شاہ خرچی

کارپوریشن سے فضول خرچی ، آتش بازی ، عربی باجا اور طعام عام ، شامیانہ کی تنصیب پر ہرجانہ، موظف عہدیدار کے پس پردہ انتظامات ، عوام حیرت زدہ
حیدرآباد۔10 مارچ (سیاست نیوز) سرکاری اداروں پر تقررات کے ساتھ ہی اگر ادارے صدرنشین کو خوش کرنے کے لیے شاہ خرچی پر اترآئیں تو پھر اسکیمات کے فوائد سے محروم افراد پر کیا گزرے گی۔ اقلیتی فینانس کارپوریشن کے صدرنشین سید اکبر حسین نے آج اپنے عہدے کا جائزہ حاصل کیا۔ اس موقع پر حج ہائوز کے احاطہ میں بڑے پیمانے پر تقریب منعقد کی گئی تھی جس کے انتظامات بتایا جاتا ہے کہ اقلیتی فینانس کارپوریشن کے بجٹ سے کئے گئے۔ آتش بازی، عربی باجا اور سینکڑوں افراد کے لیے دوپہر کے کھانے کا انتظام کیا گیا تھا۔ اگرچہ سرکاری قواعد کے مطابق کوئی بھی کارپوریشن اس طرح کی شاہ خرچی نہیں کرسکتا لیکن اگر کارپوریشن پر اثرانداز ہونے والے افراد موجود ہوں تو کچھ بھی ممکن ہے۔ بتایا جاتا ہے کہ کارپوریشن سے وابستہ ایک ریٹائرڈ عہدیدار نے پس پردہ رہ کر تمام انتظامات کیئے تھے۔ حج ہائوز کے کھلے علاقے میں جو ٹینٹ لگایا گیا تھا اس کا خرچ صدرنشین اپنی جیب سے ادا کریں گے جبکہ دیگر تمام انتظامات کی ادائیگی اقلیتی فینانس کارپوریشن کے بجٹ سے ہوگی۔ کارپوریشن کے امور میں ابھی بھی اپنی مداخلت کو برقرار رکھتے ہوئے مذکورہ ریٹائرڈ عہدیدار کو سرگرم دیکھا گیا۔ دو ہزار افراد کے لیے کھانے کا انتظام، اسٹیج کی سجاوٹ اور کارروائی چلانے کے لیے خصوصی کیمپررر کو 10 ہزار روپئے کی ادائیگی جیسے تمام خرچ اقلیتی فینانس کارپوریشن سے مکمل کرنے کی اطلاع ملی ہے۔ غیر متعلقہ افراد کی کارپوریشن کے امور میں مداخلت پر عہدیدار حیرت میں تھے۔ حال ہی میں وقف بورڈ کے صدرنشین کی حیثیت سے جناب محمد سلیم نے جائزہ حاصل کیا اگر وہ چاہتے تو بڑے پیمانے پر تقریب منعقد کرسکتے تھے لیکن انہوں نے وقف بورڈ پر کسی طرح کا بوجھ عائد نہ کرنے کا فیصلہ کیا اور سادگی سے جائزہ حاصل کرلیا۔ آج اقلیتی فینانس کارپوریشن کے صدرنشین کے استقبال کی جس طرح تیاریاں کی گئیں اور ٹینٹ کی تنصیب کے لیے کھدائی کی گئی۔ اس پر وقف بورڈ حکام نے ہرجانہ وصول کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔ بورڈ کی جانب سے گرائونڈ ٹیم کو نوٹس جاری کی گئی ہے کہ وہ انتظامات کے سلسلہ میں کی گئی کھدائی اور دیگر کاموں سے ہوئے نقصانات کا جائزہ لیں۔ کارپوریشن کے حکام نے نقصانات کی پابجائی کا وقف بورڈ کو تیقن دیا ہے۔ اسی دوران صدرنشین کے جائزہ لینے کے موقع پر سکریٹری اقلیتی بہبود سید عمر جلیل اور منیجنگ ڈائرکٹر اقلیتی فینانس کارپوریشن بی شفیع اللہ موجود نہیں تھے۔ حکومت کے مشیر برائے اقلیتی بہبود اے کے خان تقریب میں شرکت کے لیے پہنچے لیکن اسٹیج کے قریب پہنچنے پر وہاں طوفان بدتمیزی دیکھ کر واپس لوٹ گئے۔ تقریب میں شرکت کے لیے کریم نگر سے ٹی آر ایس قائدین اور کارکن حیدرآباد پہنچے تھے۔ ان کے لیے تمام انتظامات حج ہائوز کے احاطہ میں کئے گئے۔ بتایا جاتا ہے کہ صدرنشین کے چیمبر کی تیاری پر بھی بھاری خرچ ہوا ہے اور یہ کام بھی اسی شخص نے اپنی نگرانی میں انجام دیا جو سابق میں کارپوریشن سے وابستہ رہ چکا ہے۔

TOPPOPULARRECENT