Sunday , August 20 2017
Home / عرب دنیا / صنعاء انٹرنیشنل ایئرپورٹ کی بازکشادگی کا مطالبہ

صنعاء انٹرنیشنل ایئرپورٹ کی بازکشادگی کا مطالبہ

جنگ زدہ ملک میں ہزاروں افراد فاقہ کشی سے دوچار ہونے کا خطرہ لاحق
دوبئی ۔ 11 اگست (سیاست ڈاٹ کام) اقوام متحدہ میں یمن کے سفیر نے آج باغیوں کے قبضہ والے دارالخلافہ کے ایئرپورٹ کی فوری بازکشادگی کے لئے زور دیتے ہوئے گذشتہ ایک سال سے بند ایئرپورٹ کے احیاء کی خواہش کی جہاں سے صرف اقوام متحدہ کیلئے محدود تعداد میں پروازیں چلائی جاتی ہیں۔ یاد رہیکہ مارچ 2015ء میں سعودی عرب کی قیادت والے اتحاد جو حکومت حامی ہے، نے باغیوں کے قبضہ والے صنعاء میں بحری اور فضائی راستے مسدود کردیئے تھے جبکہ گذشتہ سال اگست میں ان پر مزید سختی سے عمل آوری شروع ہوئی تھی جس کیلئے جواز یہ پیش کیا گیا تھا کہ ہتھیاروں کی اسمگلنگ کی روک تھام کا یہی ایک واحد طریقہ ہے تاہم یو این ایجنسیوں اوردیگر امدادی گروپس نے بارہا یہ مطالبہ کیا کہ ایئرپورٹ کی بازکشادگی عمل میں لائی جائے تاکہ ہیضہ اور قحط سالی کا شکار ہزاروں یمنی شہریوں تک امدادی سازوسامان کی رسائی کو ممکن بنایا جاسکے۔اقوام متحدہ میں یمن کے سفیر اسمعیل شیخ احمد نے ٹوئیٹ کرتے ہوئے صنعاء انٹرنیشنل ایئرپورٹ کے فوری احیاء کا مطالبہ کیا۔ یاد رہے کہ مارچ 2015ء سے یمن میں جاری خانہ جنگی میں زائد از 8000 افراد ہلاک ہوچکے ہیں جبکہ اپریل 2016ء سے ہیضہ کی وباء کا شکار ہوکر تقریباً 2000 افراد فوت ہوچکے ہیں۔ اقوام متحدہ نے یہ انتباہ بھی دیا ہیکہ یمن میں اس وقت سات ملین افراد قحط سالی کا شکار بھی ہوسکتے ہیں۔

TOPPOPULARRECENT