Sunday , October 22 2017
Home / اضلاع کی خبریں / ضلع جگتیال میں وقف بورڈ کا کوئی پرسان حال نہیں

ضلع جگتیال میں وقف بورڈ کا کوئی پرسان حال نہیں

ایک وقف انسپکٹر، ایک اٹینڈر 2 ماہ سے طویل رخصت پر

جگتیال۔ 25 مئی (سیاست ڈسٹرکٹ نیوز) ریاستی حکومت کی جانب سے نئے اضلاع کا قیام عمل میں لایا گیا جس سے عوام کو بہتر نظم و نسق اور مسائل کی یکسوئی میں آسانی اور ضلعی انتظامیہ عوام سے قریب ہونے کی بات کہی گئی لیکن نئے ضلع کے قیام کے بعد جہاں تک وقف بورڈ محکمہ کا سوال ہے ریاستی حکومت سے وقف اراضیات کے تحفظ اور محکمہ کو جوڈیشیل اختیارات دینے کی بات کہی، وہ نظر نہیں آرہا ہے۔ ضلع کا قیام 11 اکتوبر 2016ء کو عمل میں آیا، اس کے بعد جگتیال ضلع میں محکمہ وقف بورڈ کا قیام اور ایک وقف انسپکٹر اور ایک اٹینڈر، ایک ٹیبل، ایک کرسی تک محدود ہوگیا۔ وقف انسپکٹر اور اٹینڈر بڑی مشکل سے ضلع کے قیام سے اب تک 15 یوم خدمات انجام دیئے ہیں۔ دو ماہ سے طویل رخصت پر وقف انسپکٹر حیدرآباد میں مقیم ہے جس کی وجہ سے ضلع جگتیال میں وقف بورڈ کا کوئی پرسان حال نہیں ہے اور وقف اراضیات کا تحفظ مشکل ہوگیا ہے۔ ناجائز قبضہ اور غیرمجاز تعمیرات ہورہی ہیں جس کے خلاف وقف بورڈ اور مائناریٹی کارپوریشن کے علاوہ ضلع انتظامیہ کلکٹر کو بھی تحریری اور ڈائیل یور کلکٹر سے کئی بار شکایتیں کی گئیں اور پرجاوانی پروگرام میں درخواستیں داخل کی گئی ہیں لیکن وقف بورڈ کی جانب سے کسی قسم کی کوئی کارروائی نہیں کی گئی۔ صرف نوٹس تک محدود ہوگیا ہے جبکہ ضلع کلکٹر کے احکامات بھی بے اثر ہوگئے ہیں۔ برسراقتدار پارٹی ، مقامی قائدین کے دباؤ میں اعلیٰ افسران کی خاموشی سے وقف اراضی ناجائز قبضہ کا شکار ہورہی ہے جبکہ اس وقف اراضی کو حاصل کرنے اور اس پر سے ناجائز قبضہ کو برخاست کرنے پانچ سال ٹریبونل عدالت حیدرآباد میں مقدمہ دائر کرتے ہوئے بڑی جدوجہد سے حاصل کیا گیا۔ مقامی نوجوانوں نے وقف بورڈ کی منظوری سے کمیٹی تشکیل دے کر اس کا تحفظ کیا تھا، وقف بورڈ انسپکٹر کو بارہا اس جانب توجہ دلوانے پر کوئی کارروائی نہ کرتے ہوئے طویل رخصت پر چلے جانا قابضین کے ساتھ سازباز نظر آرہا ہے۔ ایک طرف ریاستی حکومت وقف اراضیوں کا تحفظ کی بات کرتی ہے۔ دوسری طرف محکمہ وقف بورڈ کی کارکردگی اور وقف اراضیات پر ناجائز قبضوں کی شکایت کے باوجود کسی قسم کی کوئی کارروائی نہیں کی جاتی۔ صدرنشین وقف بورڈ سے خواہش کی جاتی ہے کہ وہ ضلعی سطحوں پر وقف بورڈ کے انتظامیہ کا تقرر اور اوقافی اراضیوں کے تحفظ کیلئے عملی اقدامات کریں۔

TOPPOPULARRECENT