Sunday , September 24 2017
Home / ہندوستان / طاق ۔ جفت اسکیم عآپ کی حکمرانی کی قابلیت کا ثبوت

طاق ۔ جفت اسکیم عآپ کی حکمرانی کی قابلیت کا ثبوت

چیف منسٹر دہلی کجریوال کا ادعا ، اسکیم پر 11 جنوری کو ہائیکورٹ کا فیصلہ مقرر
کولکاتا ، 8 جنوری (سیاست ڈاٹ کام) دہلی کے شہریوں کی طاق۔ جفت اسکیم کی کامیاب عمل آوری میں اپنا حصہ ادا کرنے پر ستائش کرتے ہوئے چیف منسٹر اروند کجریوال نے کہا کہ اگر مناسب قیادت دستیاب ہو تو ملک کے عوام حیرت انگیز کارنامے انجام دے سکتے ہیں۔ چیف منسٹر نے کہا کہ جب ہم نے سب سے پہلے طاق۔ جفت اسکیم کا نظریہ اختیار کیا تھا تو کئی ناقدین نے کہا تھا کہ یہ اسکیم مکمل طور پر ناممکن ہے لیکن اب آپ دیکھ سکتے ہیں کہ اسکیم کامیابی سے چل رہی ہے۔ درحقیقت اگر آپ مناسب قیادت فراہم کریں تو عوام منظم انداز میں کام کریں گے۔ اس میں کوئی شک نہیں ہے۔ انہوں نے کہا کہ اسکیم کا کامیابی سے نفاذ ثابت کرچکا ہیکہ عام آدمی پارٹی حکومت قیادت فراہم کرسکتی اور مناسب حکمرانی کرسکتی ہے۔ اس کے برعکس ناقدین کہہ رہے تھے کہ ہم صرف مظاہرے کرسکتے ہیں حکومت نہیں کرسکتے۔ کجریوال بنگال عالمی کاروباری چوٹی کانفرنس کے افتتاحی اجلاس سے خطاب کررہے تھے۔ انہوں نے کہا کہ مسئلہ نظام کے ساتھ ہے۔ قبل ازیں عوام کہہ رہے تھے کہ عام آدمی منظم نہیں ہیں لیکن لندن اور سنگاپور کے عوام بہت زیادہ نظم و ضبط کے پابند ہیں۔ میں نے ان سے کبھی اتفاق نہیں کیا۔ اگر ملک کو مناسب قیادت اور مناسب نظام حاصل ہوجائے اور عوام کا مناسب انتظام ہو تو ہندوستان کے عوام حیرت انگیز کارنامے انجام دے سکتے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ وہ اس بات سے بھی واقف ہیں کہ ہندوستان میں کاروبار کرنا بہت مشکل ہے کیونکہ کرپشن اور پیچیدہ ہندوستانی نظام موجود ہے۔ انہوں نے کہا کہ ہم نے طریقہ کار کو دہلی میں تازہ بنادیا ہے تاکہ اس کی منظوری حاصل ہوسکے اور آپ کا کام ہوسکے جہاں آپ مختلف پہلوؤں کی منظوری حاصل کرسکیں اور چند ہی منٹوں میں اس کام کی تکمیل ہوجائے۔ پہلے اس کیلئے دو تا تین ماہ درکار ہوتے تھے۔ کجریوال نے کہا کہ انہوں نے دہلی میں محلہ دواخانے تعمیر کرکے رقم کی بچت کی ہے۔ انہوں نے کہا کہ صحت اور تعلیمات کا شعبہ ان کی اولین ترجیح ہے۔ قبل ازیں محلہ دواخانہ کی تعمیر کیلئے 5 کروڑ روپئے درکار ہوتے تھے لیکن انہوں نے صرف 20 لاکھ روپئے میں دواخانہ تعمیر کرکے دکھا دیا ہے۔ دریں اثناء دہلی ہائیکورٹ میں 11 جنوری کی تاریخ طاق۔ جفت گاڑی اسکیم کے مقدر کا فیصلہ کرنے کیلئے مقرر کی ہے۔ آج اس نے مختلف درخواستوں پر جن میں عام آدمی پارٹی حکومت کے پرعزم پائلیٹ پراجکٹ کو چیلنج کیا گیا تھا، اپنا فیصلہ محفوظ کردیا اور چیف جسٹس جی روہنی اور جسٹس جینت ناتھ پر مشتمل بنچ نے 11 جنوری کو اس کے اعلان کا فیصلہ کیا۔ عام آدمی پارٹی حکومت کا جواب 6 جنوری کو داخل کیا گیا تھا جبکہ عدالتی بنچ نے طاق۔ جفت اسکیم کے بارے میں اس کی رائے طلب کی تھی۔

TOPPOPULARRECENT