Tuesday , September 26 2017
Home / پاکستان / طالبان کو آمادہ کرنے کی ذمہ داری صرف پاکستان کی نہیں: دفتر خارجہ

طالبان کو آمادہ کرنے کی ذمہ داری صرف پاکستان کی نہیں: دفتر خارجہ

اسلام آباد ۔ 26 اپریل (سیاست ڈاٹ کام)پاکستان نے دہشت گرد گروہوں میں تفریق کے حوالے سے افغانستان کے صدر اشرف غنی کے بیان کو مسترد کرتے ہوئے کہا ہے کہ وہ دہشت گردوں میں عدم تفریق پر یقین رکھتا ہے۔ اسلام آباد میں پاکستان کے دفترِ خارجہ کی جانب سے منگل کو جاری ہونے والے بیان میں کہا گیا ہے کہ پاکستان ہر طرح کی دہشت گردی کی مذمت کرتا ہے اور اْس کے خلاف جنگ جاری رکھے گا۔ پاکستان کے دفترِ خارجہ کے ترجمان نفیس ذکریا نے کہا ہے کہ پاکستان نے افغان طالبان اور افغان حکومت کے درمیان بات چیت کے پہلے دور کی میزبانی کی تھی لیکن افغان طالبان کو مذاکرات کی میز پر لانے کی ذمہ داری تنہا پاکستان پر ہی نہیں ہے۔ انھوں نے کہا کہ افغان حکومت اور طالبان کے درمیان مصالحت کے لیے پاکستان نے سنجیدہ کاوشیں کی ہیں۔ ترجمان کا یہ بھی کہنا ہے کہ پاکستان، افغانستان، چین اور امریکہ پر مشتمل چار ملکوں پر مشتمل گروپ بنانے کا مقصد افغانستان میں امن و استحکام لانا ہے۔ انھوں نے کہا کہ ہمسایہ ممالک میں امن پاکستان کے مفاد میں ہے۔ افغان پارلیمنٹ کے مشترکہ اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے افغان صدر کا کہنا تھا کہ پاکستان کو مصالحتی عمل میں کیے گئے وعدوں پر عمل درآمد کرتے ہوئے افغان طالبان کے خلاف کارروائی کرنی چاہیے۔

TOPPOPULARRECENT