Wednesday , August 23 2017
Home / شہر کی خبریں / طبی تعلیمی اداروں کے معیار اور داخلوں کو شفاف بنانے اقدامات

طبی تعلیمی اداروں کے معیار اور داخلوں کو شفاف بنانے اقدامات

مرکزی حکومت با اختیار نیشنل میڈیکل کمیشن قائم کرنے کی خواہاں ، مشاورتی عمل جاری
حیدرآباد۔10جولائی (سیاست نیوز) حکومت ہند نے ایم بی بی ایس کے تعلیمی نظام کو بہتر بنانے کے علاوہ طبی تعلیمی اداروں کے معیار اور داخلوں کے عمل کو شفاف بنانے کیلئے نیشنل میڈیکل کمیشن کے قیام کیلئے تیاریوں کا آغاز کردیا ہے ۔ بتایاجاتا ہے کہ مرکزی وزیر فینانس کی نگرانی میں تشکیل دی گئی وزراء کی کمیٹی نے NMCبل 2017کی تیاریوں کیلئے مشاورت کا عمل شروع کردیا ہے اور بہت جلد اس بات کا اعلان کیا جائے گا کہ حکومت کی جانب سے اس بل کو کب پارلیمنٹ میں پیش کیا جائے گا۔ میڈیکل کونسل آف انڈیا کو برخواست کرتے ہوئے اضافی اختیارات کے ساتھ نیشنل میڈیکل کمیشن کے قیام اور ایم بی بی ایس کی تکمیل کے بعد 5سالہ کورس پر مشتمل کورس سے اخراج کے امتحان کو منظوری کی راہ میں حائل رکاوٹیں دور ہونے لگی ہیں ۔ میڈیکل کونسل آف انڈیا کی جگہ اضافی اختیارات کے ساتھ نیشنل میڈیکل کمیشن کے قیام کے متعلق عہدیداروں کا کہنا ہے کہ کمیشن کو میڈیکل کالجس کے قواعد و ضوابط ‘ اصولوں کی ترتیب اور ایم بی بی ایس مکمل کرنے والے ڈاکٹرس کے رجسٹریشن کے علاوہ طبی اخلاقیات کے فروغ کے تمام تر اختیارات حاصل رہیں گے اور اس کمیشن کے ذریعہ ہی میڈیکل کالجس کی نشستوں پر داخلوں کا عمل مکمل کئے جانے کی منصوبہ بندی کی جا رہی ہے۔ مرکزی حکومت کی جانب سے پیش کئے جانے والے نئے بل میں ایم بی بی ایس کی تعلیم مکمل کرنے والوں کے لئے کورس کے اختتام پر بھی امتحان منعقد کرنے کے بعد ہی انہیں پریکٹس کی اجازت دیئے جانے کا منصوبہ بھی موجود ہے لیکن اس منصوبہ کی انڈین میڈیکل اسوسیشن کی جانب سے شدت سے مخالفت کی جارہی ہے اور کہا جارہا ہے کہ ایسا کرنے سے طلبہ کی حوصلہ شکنی ہوگی کیونکہ 5سالہ کورس کی تکمیل کے بعد بھی اگر انہیں سند حاصل کرنے کیلئے ایک اور امتحان لکھنا پڑتا اوروہ اس امتحان میں ناکام ہوجاتے ہیں تو ایسی صورت میں ان میں مایوسی بڑھتی چلی جائے گی۔ انڈین میڈیکل اسوسیشن کے ذمہ داروں کا کہنا ہے کہ حکومت کی جانب سے ایسا کوئی قدم اٹھایا جاتا ہے تو ایسی صورت میں ملک بھر میں ڈاکٹرس بالخصوص میڈیکل طلبہ شدید احتجاج کرسکتے ہیں کیونکہ یہ ان کے مستقبل کا مسئلہ ہے ۔ طلبہ کا کہنا ہے کہ ایم بی بی ایس میںداخلہ کے حصول کیلئے انہیں اہلیتی امتحان دینا پڑتا ہے اور وہ اس مسابقت میں نشست حاصل کرنے میں کامیاب ہوجاتے ہیں تب بھی انہیں راحت حاصل نہیں ہے کیونکہ جب 5سال کی تعلیم مکمل کرتے ہیں تو پھر انہیں سند کے حصول کیلئے بھی ایک امتحان تحریر کرنا پڑے تو نہایت مشکل ہوگا۔ ڈاکٹر نرسنگ ریڈی صدر تلنگانہ انڈین میڈیکل اسوسیشن کے مطابق حکومت کی جانب سے تیار کئے جانے والے اس بل کے متعلق کئی خدشات ہیں اوراسی طرح نیشنل میڈیکل کمیشن کے قیام کے متعلق یہ بات ضروری ہے کہ اس میں کسے نمائندگی فراہم کی جائے گی کیونکہ منتخبہ نمائندوں میں پیشہ طب سے وابستہ افراد کی کمی ہے۔

TOPPOPULARRECENT