Sunday , October 22 2017
Home / ہندوستان / طلاق کے مسئلہ پر یوپی میں اشتعال انگیزی کا منصوبہ

طلاق کے مسئلہ پر یوپی میں اشتعال انگیزی کا منصوبہ

ستمبر سے بی جے پی کے جلسے و سیمینار، مسلم بہنوں کو انصاف دلانے کا ڈھونگ

لکھنؤ۔ 2 مئی ۔(سیاست ڈاٹ کام) مسلم خواتین کو انصاف دلانے کیلئے بی جے پی آئندہ ستمبر سے تین طلاق کے معاملے پر جلسے اور سیمیناروں کا انعقاد شروع کریگی۔ اتر پردیش میں برسراقتدار آنے کے بعد زعفرانی پارٹی کی ریاستی ورکنگ کمیٹی کے پہلے اجلاس کی اطلاع دیتے ہوئے ریاستی جنرل سکریٹری وجے بہادر پاٹھک نے صحافیوں کو بتایا کہ یہ سیمیناروں کا سلسلہ پارٹی کے اقلیتی مورچہ کی طرف سے منعقد کیا جائے گا۔پاٹھک نے بتایا کہ مسلم بہنیں تین طلاق کے خلاف ہیں،اس بارے میں وزیر اعظم، وزیر اعلی اور پارٹی کے لوگوں سے وہ رابطے بھی کرتی ہیں۔ پارٹی نے اسے سنجیدگی سے لیا ہے ۔ اس مسئلے پر سیمینار اور جلسے منعقد کرکے دودھ کا دودھ، پانی کا پانی کر دیا جائے گا۔ تین طلاق کے مسئلہ پر پارٹی ہر حال میں مسلم بہنوں کو انصاف دلائے گی۔ اس کے ساتھ ہی خواتین کو بااختیار بنانے کے پروگرام منعقد کئے جائیں گے ۔انہوں نے بتایا کہ ورکنگ کمیٹی کے اجلاس میں بلدیاتی انتخابات پوری طاقت سے لڑنے کا فیصلہ کیا گیا ہے۔ فی الحال شہری حلقوں کے حد بندی کا کام چل رہا ہے ۔ ووٹر لسٹ کی قطعی اشاعت کے بعد پارٹی امیدوار طے کرنا شروع کرے گی۔ پارٹی امیدواروں کو ٹکٹ دینے کا بندوبست شفاف رکھے گی۔ پاٹھک نے بتایا کہ 5مئی سے 7 مئی تک ریاست کے تمام اضلاع میں ضلع ورکنگ کمیٹی کی میٹنگیں ہوں گی۔ میٹنگوں کے ذریعے بلدیاتی انتخابات کی تیاریاں بھی چلتی رہیں گی۔10 سے 25 مئی کے درمیان عوامی رابطہ پروگرام چلایا جائے گا۔ پارٹی نے 100دن کے کام کا منصوبہ تیار کیا ہے ۔ اسی کے تحت منصوبوں کو بنیادی سطح پر لایا جائے گا۔انہوں نے بتایا کہ اجلاس میں پنڈت دین دیال اپادھیائے کی صد سالہ یوم پیدائش تقاریب کو پارٹی کی توسیع کے طور پر منانے کا فیصلہ کیا گیا ہے جس کے تحت ’میرا گھر، بی جے پی کا گھر‘، شجر کاری مہم، عوامی فلاح کانفرنس، خون کا عطیہ، سروس ساتھی سنگم، علاقائی کانفرنس، جنرل مسابقہ، کھیلوں کا تہوارجیسے پروگرام منعقد کئے جائیں گے ۔پارٹی کے ریاستی جنرل سکریٹری نے بتایا کہ اجلاس میں شکریہ کی قرارداد منظور کی گئی ہے ، جس میں اسمبلی انتخابات میں تاریخی جیت کے لئے کارکنوں اور عوام کے تئیں شکریہ ادا کیا گیا۔ اجلاس میں فیصلہ کیا گیا کہ گاؤں، غریب، کسان، جھگی جھونپڑی میں رہنے والے غریبوں کو بے سہارا مان کر ان کی مدد کی جائے گی۔پاٹھک نے بتایا کہ اجلاس میں کہا گیا کہ انتخابات میں کراری شکست کے بعد الیکٹرانک ووٹنگ مشین (ای وی ایم) کو مورد الزام ٹھہرانے والی اپوزیشن جماعتوں کو دہلی میونسپل انتخابات میں بھی کرارا جواب دیا گیاہے ۔ ورکنگ کمیٹی نے ایم سی ڈی الیکشن میں پارٹی کی جیت کیلئے وہاں کے عوام کا بھی شکریہ ادا کیا ۔انہوں نے بتایا کہ اجلاس میں طے کیا گیا کہ ملک کی سیاسی، سماجی اور اقتصادی حالت طے کرنے والی ریاست اتر پردیش میں پارٹی کا مینڈیٹ مسلسل بڑھایا جائے تاکہ 2019 ء کے عام انتخابات میں بی جے پی کو 73 کے بجائے تمام 80 سیٹوں پر جیت حاصل ہو سکے۔ ورکنگ کمیٹی کے دو روزہ اجلاس کے آخری دن آج دین دیال اپادھیائے جینتی سال کو دھوم دھام سے منانے کے ساتھ اس موقع پر منعقد ہ پروگراموں کے ذریعے عوام میں براہ راست رسائی بڑھانے کا فیصلہ کیا گیا۔اجلاس میں وزیر اعلی یوگی آدتیہ ناتھ، نائب وزیر اعلی کیشو پرساد موریہ، ڈاکٹر دنیش شرما، پارٹی کے نائب صدر اور ریاستی انچارج اوم ماتھر نے اپنے اپنے خیالات کا اظہارکیا۔

TOPPOPULARRECENT