Friday , October 20 2017
Home / اضلاع کی خبریں / ظہیرآباد میں حیدرآباد کے روڈی شیٹر کا بہیمانہ قتل

ظہیرآباد میں حیدرآباد کے روڈی شیٹر کا بہیمانہ قتل

آپسی رنجش واقعہ کا سبب ، مقتول ایک مہینہ پہلے ہی جیل سے رہا ہوا تھا ، ڈی ایس پی کا انکشاف

ظہیرآباد ۔ 8 اگسٹ ۔ ( سیاست ڈسٹرکٹ نیوز )صنعت نگر ، حیدرآباد کے ایک روڈی شیٹر سید واحد کا کل یہاں ایس ۔ این گرین سٹی نامی ایک وینچر کے فارم ہاؤز میں بے دردی کے ساتھ قتل کردیا گیا ۔ قتل کی وجہ آپسی رنجش بتائی گئی ہے۔ اطلاع ملتے ہی ڈی ایس پی سنگاریڈی ڈیویژن مسٹر تروپتنا دیگر پولیس عہدیداران کے ہمراہ جائے ورادات پہنچ کر حسب ضابطہ کارروائی انجام دینے کے بعد نعش کو بغرض پوسٹ مارٹم سرکاری دواخانہ ظہیرآباد کو منتقل کردیا جہاں پوسٹ مارٹم کے بعد نعش ورثاء کے حوالے کردی گئی ۔ بعد ازاں پولیس اسٹیشن ظہیرآباد کے سی آئی چیمبر میں ایک پریس کانفرفنس سے خطاب کرتے ہوئے ڈی ایس پی مسٹر تروپتنا نے قتل کی تفصیلات کا انکشاف کرتے ہوئے بتایا کہ صنعت نگر حیدرآباد کے روڈی شیٹر سید واحد کل شام 7 بجے اپنے 6 تا 7 ساتھیوں کے ہمراہ سفاری اور اینوا کاروں کے ذریعہ ایس این گرین سٹی کے فارم ہاوز پہنچے جہاں اس کے ساتھ کوکٹ پلی علاقہ کے روڈی شیٹر فیروز اور اس کے ساتھیوں نے ایک پارٹی کا انتظام پہلے ہی سے کر رکھا تھا ۔ اس موقع پر فیروز اور سید واحد گروپس کے ساتھیوں نے کل رات دیر تک شراب نوشی میں مصروف رہے اور تقریباً 2:30 بجے شب روڈی شیٹر سید واحد  کا چاقو کے ذریعہ شدید ضربات پہنچاکر بیدردی کے ساتھ قتل کردیا جب کہ وہ شراب کے نشے میں چور تھا ۔ جائے وردات پر سید واحد نے زخموں کی تاب نہ لاکر دم توڑ دیا، دونوں روڈی شیٹرس کے گروپ کے افراد نے جائے واردات سے راہ فرار اختیار کی ۔ ڈی ایس پی نے مزید انکشاف کرتے ہوئے بتایا کہ مقتول سید واحد صنعت نگر علاقہ کا روڈی شیٹر تھا جو پی ڈی ایکٹ کے تحت ایک سال تک جیل میں محروس رہنے کے بعد ایک ماہ قبل ہی ضمانت پر رہا ہوا تھا ۔ نیز وہ 11 مختلف مقدمات میں ملوث تھا جن میں 3 قتل ، 3عصمت ریزی کے بشمول زمینات پر غاصبانہ قبضوں کے مقدمات بھی شامل ہیں۔ مقتول کا ساتھی فیروز بھی کوکٹ پلی کا روڈی شیٹر ہے جو 6مختلف مقدمات میں ملوث ہے۔ ڈی ایس پی نے بتایا کہ پولیس نے اس خصوص میں ایک مقدمہ درج رجسٹر کرتے ہوئے تحقیقات کا آغاز کردیا ہے ۔ انھوں نے اس قتل کو منصوبہ بند قرار دیا ۔ اس موقع پر پولیس عہدیداران مسرز ناگراج سی ۔ آئی ، راج شیکھر ، سری کانت ، راج شیکھر سب انسپکٹر بھی پریس کانفرنس میں موجود تھے ۔ قبل ازیں سرکاری دواخانہ ظہیرآباد میں پوسٹ مارٹم کے وقت موجود مقتول سید واحد کے چھوٹے بھائی سید ندیم نے میڈیا کے نمائندوں کو بتایا کہ ان کے بھائی سید واحد اور فیروز کے درمیان گزشتہ چند مہینوں سے اختلافات پیدا ہوگئے تھے جنھیں بات چیت کے ذریعہ ختم کرنے کے لئے فیروز نے کل ان کے بھائی سید واحد کو ظہیرآباد کے ایک فارم ہاوز میں آنے کی دعوت دی تھی ۔ کیا پتہ تھا کہ ان کے بھائی کو قتل کرنے کے منصوبہ کی تکمیل کے لئے بلایا گیا تھا ۔ بتایا جاتا ہے کہ جائے واردات پر شراب کے دو کارٹون اور خواتین کی چپلیں بھی پائی گئیں۔

TOPPOPULARRECENT