Saturday , August 19 2017
Home / ہندوستان / عالمی تنظیم تجارت میں ہندوستان کے موقف کو مرکزی منظوری

عالمی تنظیم تجارت میں ہندوستان کے موقف کو مرکزی منظوری

بہار اور جھارکھنڈ کیلئے 4,918 کروڑ روپئے مالیتی شوارع پیاکیج منظور
نئی دہلی 20 جنوری (سیاست ڈاٹ کام) مرکزی کابینہ نے آج ہندوستان کے غذائی طمانیت کے سلسلہ میں گزشتہ عالمی تنظیم تجارت کے اجلاس میں جو نیروبی میں منعقد ہوا تھا، اختیار کردہ موقف کی تقدیمی اثر کے ساتھ منظوری دے دی۔ کابینہ نے کہاکہ کانفرنس کے نتائج جسے نیروبی پیاکیج کہا جاتاہے، وہ وزارتی فیصلہ بھی رکھتا ہے جو حکومت ہند نے زراعت اور کپاس کے سلسلہ میں کئے تھے۔ اُن سے ایک خصوصی تحفظاتی نظام قائم ہوتا ہے جو ترقی یافتہ ممالک اور سرکاری حصص کے مالکوں نے غذائی صیانت کے لئے قائم کیا ہے۔ رسمی عالمی تنظیم تجارت وزارتی سطح کی کانفرنس کا اختتام ڈسمبر میں نیروبی میں ہوا تھا، ہندوستان چاہتا ہے کہ سرکاری ذخائر رکھنے کے مسائل کا مستقل حل غذائی صیانت پروگرام کے لئے تلاش کیا جائے۔ حکومت ہند نے تجویز پیش کی تھی کہ یا تو غذائی سبسیڈی کی تحدید 10 فیصد مقرر کرنے کے فارمولہ میں ترمیم کی جائے، جس کی بنیاد 1986-88 ء کے حوالہ کی قیمت ہے یا پھر ایسی اسکیموں کی اجازت دی جائے جو سبسیڈی کی تحدید کے دائرہ کار سے باہر ہوں۔ غذائی طمانیت ایک ایسا مسئلہ ہے جو کئی ترقی پذیر ممالک سے متعلق ہے جو غریبوں کے لئے غذائی اجناس کو رعایتی قیمتوں میں فراہم کرتے ہیں۔ مرکزی کابینہ نے 4,918 کروڑ روپئے کا پیاکیج بہار اور جھارکھنڈ کیلئے بھی منظور کیا ہے۔

TOPPOPULARRECENT