Monday , July 24 2017
Home / Top Stories / عالمی معیشت میں طویل عرصہ بعد بہتری ، بعض ملکوں کی پالیسی سے خطرہ

عالمی معیشت میں طویل عرصہ بعد بہتری ، بعض ملکوں کی پالیسی سے خطرہ

یہ صدی ہندوستان اور افریقہ دونوں کی ہوگی۔ افریقی ترقیاتی بینک کے اجلاس سے ارون جیٹلی کا خطاب

گاندھی نگر۔ 23 مئی ۔(سیاست ڈاٹ کام) مرکزی وزیر خزانہ ارون جیٹلی نے آج کہا کہ بحران کے طویل دور کے بعد عالمی معیشت اب پٹری پر لوٹ رہی ہے ، حالانکہ کچھ ترقی یافتہ ممالک کی اپنے ہی مفادات پر مبنی پالیسی کے سبب اس کے پھر سے بحران کا شکار ہو جانے کا امکان بھی بڑھ رہا ہے ۔ جیٹلی نے آج یہاں افریقی ترقیاتی بینک گروپ کے بورڈ آف ڈائریکٹرس کے سالانہ اجلاس کی افتتاحی تقریب میں وزیر اعظم نریندر مودی کی موجودگی میں کہا کہ دنیا غیر یقینی صورتحال سے گزر رہی تھی مگر اقتصادی سرگرمیوں میں سست روی کے طویل دور کے بعد آخر کار بہتری کا آغاز ہو گیا ہے ۔ گزشتہ برس عالمی اقتصادی شرح نمو 3.5 فیصد تھی جو اس سال بہتر ہو کر 3.6 فیصد رہنے کی توقع ہے لیکن کچھ بڑی معیشتوں کی صرف ذاتی مفاد کو دیکھنے (عالمگیریت کے برعکس) کی پالیسی کے سبب اس کے پھر سے بحران کا شکار ہوجانے کا ااندیشہ بھی بڑھ رہا ہے ۔ انہوں نے اس ضمن میں اپنے حالیہ دورۂ امریکہ کے دوران ہوئے ملے جلے تجربہ کا بھی ذکر کیا۔ اگرچہ انہوں نے کہا کہ افریقہ اور ہندوستان دونوں بہتر مظاہرہ کررہے ہیں اور یہ صدی صرف ایشیا کے بجائے ایشیا اور افریقہ دونوں کی ہوگی۔ دنیا کی ایک تہائی آبادی ہندستان اور افریقہ میں رہتی ہے ۔ جیٹلی نے کہا کہ کئی طرح کی اقتصادی اصلاحات سے ہندستان کی اقتصادی شرح نمو رواں مالی سال کے دوران 7.7 فیصد رہے گی۔ افریقہ بھی اب بہتر کر رہا ہے اور اس کی اوسط اضافہ کی شرح بھی اس سال 3.4 فیصد رہے گی۔ وہاں متوسط طبقے کی آبادی بھی بڑھ رہی ہے جس کی خریداری کی صلاحیت بڑھنے سے وہاں کی معیشت کو مزید مضبوطی ملے گی۔ ہندوستان اور افریقہ کو ایک دوسرے پر بغیر کسی شرط کے تعاون کے راستے پر چلتے رہنا چاہئے ۔ دونوں کے درمیان تعاون اور تعلقات مزید مضبوط ہو رہے ہیں۔ صدر، نائب صدر اور وزیر اعظم نے حال میں 16 افریقی ممالک کا دورہ کیا ہے اور ایسا ایک بھی افریقی ملک نہیں جہاں کوئی نہ کوئی ہندستانی وزیر نہ گیا ہو۔ یہ محض اتفاق نہیں ہے۔ جیٹلی نے یہ بھی کہا کہ افریقہ میں زرعی شعبے میں بے پناہ امکانات ہیں۔ افریقہ میں پوری دنیا کی 60 فیصد قابل کاشت زمین ہے جبکہ وہاں اب تک صرف 10 فیصد اناج کی ہی پیداوار ہوتی ہے۔ دوسری طرح دنیا کی آبادی کے 17 فیصد کا بوجھ سنبھالنے والے ہندوستان کے حصے میں ایسی صرف 2 فیصد زمین ہی ہے ۔ انہوں نے امید ظاہر کہ ہندوستان اور افریقہ کے درمیان بڑھ رہے باہمی تعلقات مستقبل میں مزید مضبوط ہوں گے ۔

 

جیٹلی کے تازہ ہتک عزت مقدمہ پر ہائیکورٹ کو کجریوال کا جواب مطلوب
نئی دہلی ۔ 23 مئی ۔(سیاست ڈاٹ کام) دہلی ہائیکورٹ نے مرکزی وزیر ارون جیٹلی کی جانب سے داخل کردہ 10 کروڑ روپئے کے ہتک عزت مقدمہ پر اروند کجریوال سے جواب مانگا ہے ۔ جیٹلی نے یہ تازہ مقدمہ چیف منسٹر کے وکیل رام جیٹھ ملانی کی جانب سے حالیہ شنوائی کے دوران اُن کے خلاف قابل اعتراض لفظ استعمال کرنے پر دائر کیا ہے۔ جوائنٹ رجسٹرار پنکچ گپتا نے کجریوال کو نوٹس جاری کرتے ہوئے اُن سے جواب دینے کیلئے کہا کہ اُن کے خلاف ہتک عزت کے سلسلے میں عدالتی کارروائی کیوں نہ شروع کی جائے ۔ ہائیکورٹ کے جوائنٹ رجسٹرار کسی دیوانی مقدمہ کی عدالت میں شنوائی سے قبل اُس کے تکنیکی پہلوؤں کا جائزہ لیتے ہیں ، انھوں نے سماعت کی اگلی تاریخ 26 جولائی مقرر کی اور تب تک چیف منسٹر کو اپنا جواب داخل کرنا ہوگا۔ 17 مئی کو مرکزی وزیر پر جراح کے دوران دہلی ہائیکورٹ میں جوائنٹ رجسٹرار کے روبرو جیٹھ ملانی نے ایک اصطلاح کا استعمال کیا تھا جس پر جیٹلی معترض ہوئے ۔

Leave a Reply

TOPPOPULARRECENT