Tuesday , August 22 2017
Home / کھیل کی خبریں / عامر کی دورۂ نیوزی لینڈ کیلئے ٹیم میں شمولیت کا امکان

عامر کی دورۂ نیوزی لینڈ کیلئے ٹیم میں شمولیت کا امکان

لاہور۔19 ڈسمبر (سیاست ڈاٹ کام ) پاکستان کرکٹ بورڈ(پی سی بی)نے کرکٹ ٹیم کے کھلاڑیوں کے فٹنس ٹریننگ کیمپ میں اسپاٹ فکسنگ کے سزاء یافتہ فاسٹ بولر محمد عامر کو بھی شامل کرلیا۔پی سی بی کی جانب سے  جاری بیان کے مطابق چیئرمین شہریارخان نے سلیکشن کمیٹی کی جانب سے تربیتی کیمپ کے لئے دیے گئے محمد عامر سمیت 26 کھلاڑیوں کے ناموں کی منظوری دے دی ہے۔ فٹنس ٹریننگ کیمپ کا انعقاد 21 دسمبر سے 7 جنوری 2016 تک قذافی اسٹیڈیم لاہور میں ہو گا۔تربیتی کیمپ کا مقصد آنے والے بین الاقوامی ٹورنمنٹ کے لئے کھلاڑیوں کی جسمانی فٹنس اور تکنیکی صلاحیتوں کو بڑھانا ہے۔ پی سی بی نے قائد اعظم ٹرافی کے 8ویں مرحلے میں مصروف کھلاڑیوں کو20 تا 23 دسمبر  ڈومیسٹک میچوں میں حصہ لینے کی اجازت دے دی ہے اور یہ کھلاڑی 24 دسمبر کے بعد تربیتی کیمپ میں شامل ہوں گے۔

پاکستانی کرکٹ ٹیم کے کیمپ طلب کئے جانے والے محمد عامر نے وعدہ کیا ہے کہ وہ پاکستانی جرسی کا احترام کریں گے۔ 2010 کے لارڈز ٹسٹ میں اسپاٹ فکسنگ میں ملوث فاسٹ بولر محمد عامر پر سے پابندی کے خاتمے کے بعد انہیں رواں سال ہر طرز کی کرکٹ کھیلنے کی اجازت مل گئی۔ڈومیسٹک کرکٹ اور بنگلہ دیش پریمیئر لیگ میں متاثر کن کارکردگی کی بدولت وہ سلیکٹرز کی توجہ حاصل کرنے میں کامیاب رہے۔ اپنی کرکٹ میں واپسی کے بعد سے وہ غیر فرسٹ کلاس میچوں میں 22 وکٹیں حاصل کرنے میں کامیاب رہے جبکہ قائد اعظم کے کوالیفائنگ راؤنڈ میں انہوں نے بہترین کارکردگی دکھاتے ہوئے 34 وکٹیں لیں۔نیز دو فرسٹ کلاس میچوں میں انہوں نے نو وکٹیں لینے کے کے علاوہ دو نصف سنچریاں بھی اسکور کیں۔ عامر نے کہا کہ میں یہ ثابت کرنے کی پوری کوشش کروں گا کہ میں ایک تبدیل ہو گیا ہوں۔ انہوں نے مزید کہا کہ میں وعدہ کرتا ہوں کہ اپنی پاکستانی جرسی کا احترام کروں گا۔ ذرائع کے مطابق پی سی بی کے گورننگ باڈی میں محمد عامر کو ٹیم میں شامل کرنے پر اختلافات پیدا ہوگئے ہیں۔  گورننگ باڈی کے ارکان کاموقف ہے کہ ملک کی بدنامی کا باعث بننے والے فاسٹ بولر کی ٹیم میں شمولیت سے نہ صرف مغربی میڈیا کو تنقید کا موقع ملے گا بلکہ تماشائی بھی کھلاڑی پر جملے بازی کریں گے۔

پی ایس ایل کیلئے کل کھلاڑیوں کا انتخاب
کراچی ۔19 ڈسمبر (سیاست ڈاٹ کام ) پاکستان سوپر لیگ میں کھلاڑیوں کے ڈرافٹ کے عمل کیلئے پی سی بی نے 21 اور 22 دسمبر کی تاریخوں کا باقاعدہ اعلان کر دیا۔ کرکٹ بورڈ ترجمان کے مطابق پی ایس ایل میں ڈرافٹ کا عمل اس لئے رکھا گیا کہ فرنچائزز کو بولی کی الجھن میں نہ پھنسنا پڑے اور وہ فکسڈ رقم میں کھلاڑیوں کو خرید سکیں۔ ڈرافٹ کا عمل اس لئے بھی طے کیا گیا کہ تمام پانچ ٹیمیں یکساں مضبوط ہو ں اور ٹورنمنٹ میں ان کے درمیان معیاری مقابلے ہو سکیں۔ پی ایس ایل ڈرافٹ کے عمل میں پندرہ ممالک کے کھلاڑیوں کو پانچ زمروں  پلاٹینم، ڈائمنڈ، گولڈ، سلور اور ایمرجنگ میں تقسیم کیا گیا ہے۔ ہر ٹیم پلاٹینم، ڈائمنڈ اور گولڈ سے تین ،تین کھلاڑی منتخب کر سکتی ہے اور ان نو کھلاڑیوں میں چار پاکستانی اور چار بیرونی کھلاڑیوں کا ہونا ضروری ہے۔ سلور کیٹیگری میں ہر ٹیم پانچ کھلاڑی جبکہ ایمرجنگ سے دو کھلاڑیوں کو منتخب کریں گی۔ اسکواڈ کم از کم سولہ کھلاڑیوں پر مشتمل ہو گا لیکن ٹیمیں زیادہ سے زیادہ بیس کھلاڑی رکھ سکتی ہیں۔ سولہ کھلاڑیوں پر مشتمل ٹیم کیلئے نو لاکھ پچاسی ہزار ڈالرز جبکہ بیس کھلاڑیوں کیلئے گیارہ لاکھ ڈالر زخرچ کرنا ہوں گے۔ راؤنڈ ون میں پانچوں فرنچائز ٹیمیں کھلاڑیوں کا انتخاب بیلٹ پر کریں گی۔ واضح رہے کہ سولہ رکنی ٹیم گیارہ پاکستانی اور پانچ بیرونی کھلاڑیوں پر مشتمل ہو گی جبکہ بیس رکنی ٹیم میں چودہ پاکستانی اور چھ بیرونی کھلاڑی شامل کرنا لازمی ہے۔دوسری جانب  آل رائونڈر عبدالرزاق اور زمبایوے کے کھلاڑی کریگ کریمر کو بھی پی ایس ایل کا حصہ بنا لیا گیا ہے۔

TOPPOPULARRECENT