Thursday , October 19 2017
Home / شہر کی خبریں / عثمانیہ جنرل ہاسپٹل نظام دور حکومت کا صحت عامہ کے لیے تحفہ ، عمارت کی خوبصورتی بے مثال

عثمانیہ جنرل ہاسپٹل نظام دور حکومت کا صحت عامہ کے لیے تحفہ ، عمارت کی خوبصورتی بے مثال

تلنگانہ پولیٹیکل جے اے سی کا دورہ ، ہاسپٹل کی برقراری پر جے اے سی میں نا اتفاقی ، اسٹرینگ کمیٹی میں جائزہ لینے کا اعلان ، پروفیسر کودنڈا رام
حیدرآباد۔3اگست(سیاست نیوز) چیرمن تلنگانہ پولیٹیکل جے اے سی پروفیسر کودنڈرام نے آج عثمانیہ دواخانہ کا دورہ کیا۔ اس موقع پر ان کے ہمراہ جے اے سی میں شامل مختلف شعبہ حیات اور تنظیموں کے قائدین شامل تھے۔ کودنڈارام نے دواخانہ عثمانیہ کی قدیم عمارت کا وفد کے ہمراہ دورہ کرتے ہوئے حالات کا جائزہ لیااور ڈاکٹرس سے بات چیت کرتے ہوئے معلومات حاصل کئے قبل ازیں پروفیسر کودنڈرام چیرمن ٹی جے اے سی کی نگرانی میں ہاسپٹل سپرنٹنڈنٹ کے دفتر میں متعلقہ ڈاکٹرس ‘ پیرا میڈکل عملے کے ہمراہ جے اے سی اسٹیرنگ کمیٹی کا اجلاس منعقد کیا جس کا مقصدکمیٹی میں ہاسپٹل کے دورہ ‘ موجودہ صورتحال اور حالیہ پیدا ہونے والے تنازعات کے تناظر میںاراکین سے رائے مشورے طلب کرنا تھامگر اجلاس میںشریک پیرا میڈیکل اسٹاف اور سینئر ڈاکٹرس کی یونینوں کے درمیان زبردست بحث و تکرار کی صورتحال اس حد تک پہنچ گئی کہ چیرمن ٹی جے اے سی کودنڈرام کو بیچ بچائو کے لئے میدان میں اترنا پڑاکچھ ہی لمحات میںحالات ہاتھا پائی کی نوبت تک پہنچ گئے تھے کیونکہ ایک گروپ ہاسپٹل کے انہدام پر مضرتو دوسرا گروپ مخالف تھا ۔ ان دونوں کے درمیان اس معاملے کو لیکر اس پر بحث وتکرار ہوگئی لیکن پروفیسر کودنڈرام نے اس مسئلہ کو مزید الجھنے سے بچانے کے لئے جے اے سی میں شامل مزید گروپ سے مشورہ کرنے کی تجویز پیش کی۔ بعد ازاں انہوں نے پریس کانفرنس کے دوران بتایا کہ عثمانیہ ہاسپٹل کا وہ خود دورہ کیا۔ صورتحال سے واقفیت حاصل کی ، مریضوں اور ڈاکٹرس سے رائے مشورے حاصل کئے اور اس ضمن میں جے اے سی مختلف گروپس سے با ت کرنے کا بھی ارادہ رکھتی ہے۔انہوں نے اس امر کو اندرون چار یوم تکمیل کرنے کا اعلان کیا جس کے بعد جے اے سی اسٹیرینگ کمیٹی کا وفد متفقہ طور پر چیف منسٹر سے نمائندگی کرے گا۔پروفیسر کودنڈرام نے پریس کانفرنس کے دوران اس بات کی طرف بھی اشارہ دیا کہ آصفیہ دور حکومت میںتعمیرکردہ عثمانیہ دواخانہ کے استفادہ کنندگان کی اکثریت پرانے شہر سے تعلق رکھتی ہے۔یہ چونکہ نظام حکومت کی جانب سے صحت عامہ کے لئے ایک تحفہ ہے او رعمارت کی خوبصورتی ، تعمیر وفنکاری کے پیش نظر اس بات سے انکار نہیںکیا جاسکتا ہے کہ یہ ہرٹیج عمارت ہے اور جے اے سی آپسی مشاورت کے بعد مرکزی او رریاستی حکومتوں سے نمائندگی کے دوران عوامی جذبات کا لحاظ رکھے گی اور عوام کے مفادات کے مطابق ہی جے اے سی اپنے نظریہ پر قائم بھی رہے گی۔ کودنڈرام نے کہاکہ گذشتہ چند دنوں قبل چیف منسٹر کے چندرشیکھر رائو نے ہاسپٹل کا دورہ کرنے کے بعداس کی منتقلی کا فیصلہ کیا تھا ۔ لیکن حکومت ایک طرف اپنے منصوبے کے مطابق عمل کررہی ہے تو دوسری جانب مخالفت میں شدت پید ا ہوگئی ہے ۔ جے اے سی چیرمن نے مزید کہاکہ عمارت کے تحفظ او رمریضوں کی بہتر نگہداشت پر بھی حکومت کو جے اے سی توجہہ دلائے گی۔ انہوں نے کہا کہ عمارت سے متعلق قطعی فیصلے سے قبل عوامی جذبات اور مریضوں کو درپیش مشکلات کو پیش نظر رکھنا ضروری ہے۔ ٹی این جی اوز صدر رویندر ریڈی‘ جنرل سکریٹری عبدالحمید‘ ٹی جی اوز گریٹر حیدرآباد صدر کرشنا یادو‘ ٹی این جی اوز گریٹر حیدرآباد صدر ایس ایم حسینی مجیب ‘ جے اے سی اسٹیرنگ کمیٹی اراکین راجندر ریڈی‘ سدھیر ریڈی‘شریمتی راشیل‘ ڈاکٹر سرینواس ریڈی‘ مولانا حامد محمد خان کے علاوہ صدر نشین ایچ اے ایس انڈیا مولانا سید طارق قادری او ردیگر بھی اس موقع پر موجودتھے۔

TOPPOPULARRECENT