Saturday , September 23 2017
Home / شہر کی خبریں / عثمانیہ جنرل ہاسپٹل کو کارپوریٹ ہاسپٹل کے طرز پر تبدیل کرنے کا منصوبہ

عثمانیہ جنرل ہاسپٹل کو کارپوریٹ ہاسپٹل کے طرز پر تبدیل کرنے کا منصوبہ

انہدام پر بالواسطہ تائید ، وزیر آبپاشی ٹی ہریش راؤ کی پریس کانفرنس
حیدرآباد۔/12اگسٹ، ( سیاست نیوز) وزیر آبپاشی ہریش راؤ نے آج بالواسطہ طور پر عثمانیہ ہاسپٹل کی قدیم عمارت کے انہدام کی تائید کرتے ہوئے الزام عائد کیا کہ کانگریس پارٹی تلنگانہ حکومت کے ترقیاتی اقدامات میں رکاوٹ پیدا کرنے کے مقصد سے کام کررہی ہے اور ہر کام پر تنقیدوں سے اس کے مقاصد کا اندازہ ہوتا ہے۔ میڈیا کے نمائندوں سے بات چیت کرتے ہوئے ہریش راؤ نے حکومت کے خلاف کانگریس کی مہم پر سخت برہمی کا اظہار کیا۔ انہوں نے کہا کہ عثمانیہ ہاسپٹل کو کارپوریٹ سطح کے ہاسپٹل میں تبدیل کرنے کیلئے حکومت کی مساعی کی راہ میں کانگریس نے رکاوٹ پیدا کرنے کی کوشش کی ہے۔ انہوں نے کہا کہ ہاسپٹل کی عمارت انتہائی خستہ حالت میں اور شدید بارش کی صورت میں عمارت کے منہدم ہونے کا خطرہ لاحق ہوچکا ہے۔ انہوں نے کہا کہ عمارت کی خستہ حالی کے سبب ڈاکٹرس ، مریضوں اور طبی عملے کی زندگی کو خطرہ لاحق ہوسکتا ہے۔ حکومت غریبوں کو کارپوریٹ سطح کی طبی خدمات فراہم کرنے کی کوشش کررہی ہے لیکن کانگریس پارٹی کی مخالفت سے ایسا محسوس ہوتا ہے کہ اسے یہ بات منظور نہیں۔ انہوں نے کانگریس قائدین سے سوال کیا کہ کیا غریبوں کو بہتر طبی سہولتوں کی فراہمی کی وہ تائید نہیں کریں گے۔

 

انہوں نے کہا کہ کانگریس قائدین جو بڑے کارپوریٹ ہاسپٹلس میں خود کا علاج کراتے ہیں وہ غریبوں کو بہتر طبی سہولتوں سے محروم کرنے کی کوشش کررہے ہیں۔ ہریش راؤ نے کہا کہ حیدرآباد جیسے بڑے شہر میں کوئی بڑی کانفرنس کے انعقاد کیلئے کوئی بڑی عمارت موجود نہیں ہے۔ حکومت نے اس مقصد سے کلا بھون کی تعمیر کا فیصلہ کیا لیکن کانگریس پارٹی نے عدالت سے رجوع ہوکر رکاوٹ پیدا کرنے کی کوشش کی ہے۔ انہوں نے بتایا کہ گرام جیوتی پروگرام کیلئے جائزہ اجلاس منعقد کرنے حیدرآباد سے 20کلو میٹر دور راجندر نگر میں واقع اگریکلچر یونیورسٹی کا انتخاب کرنا پڑا۔ انہوں نے کہا کہ حکومت نے آبپاشی پراجکٹس کا آغاز کسانوں کی بھلائی کے مقصد سے کیا ہے۔ حکومت کے آبپاشی پراجکٹس کنٹراکٹرس کے فائدے کے بجائے کسانوں کے فائدے کیلئے ہونے چاہیئے۔ انہوں نے الزام عائد کیا کہ کانگریس پارٹی نے کنٹراکٹرس کو فائدہ پہنچانے کیلئے پراجکٹس کا آغازکیا تھا جبکہ ٹی آر ایس حکومت کی ترجیح کسانوں کی بھلائی ہے۔ ہریش راؤ نے کہا کہ تلنگانہ میں شروع کئے گئے آبپاشی پراجکٹس بہر صورت مکمل کئے جائیں گے اور اس کیلئے فنڈ کی کوئی کمی حائل نہیں ہوگی۔ انہوں نے مختلف آبپاشی پراجکٹس کا حوالہ دیا اور کہا کہ ان پراجکٹس کے ذریعہ زرعی اراضی کو سیراب کیا جائے گا اور تلنگانہ میں خشک سالی کے مسئلہ کا مستقل حل تلاش کرنے کی کوشش کی جائے گی۔ انہوں نے بتایا کہ لیجسلیچر پارٹی کے اجلاس میں چیف منسٹر نے گرام جیوتی پروگرام کو کامیاب بنانے کیلئے عوامی نمائندوں سے اپیل کی ہے۔

Top Stories

TOPPOPULARRECENT