Friday , October 20 2017
Home / شہر کی خبریں / عدالتوں میں عام آدمی کی مدد کیلئے اضافی کام پر زور

عدالتوں میں عام آدمی کی مدد کیلئے اضافی کام پر زور

ہائیکورٹ چیف جسٹسوں کی کانفرنس : اندرا کرن ریڈی کا خطاب
حیدرآباد 24 اپریل ( این ایس ایس ) عدالتوں میں صبح کے وقت ‘ شام میں اور تعطیلات میں بھی کام کرنے کی ضرورت ہے تاکہ عام آدمی کو زیر التوا مقدمات کی برسر موقع یکسوئی کے ذریعہ تیزی سے انصاف فراہم کیا جائے ۔ تلنگانہ کے وزیر قانون اے اندرا کرن ریڈی نے اس خیال کا اظہار کیا اور کہا کہ کمرشیل عدالتیں بھی قائم کی جانی چاہئیں۔ اندرا کرن ریڈی نے تمام چیف منسٹروں اور ہائیکورٹس کے چیف جسٹسوں کی قومی کانفرنس میں تلنگانہ کی نمائندگی کرتے ہوئے کہا کہ ضرورت اس بات کی ہے کہ عام آدمی کی مدد کرنے کے مقصد سے مقدمات کی تیزی کے ساتھ یکسوئی کی جانی چاہئے اور اس کیلئے موثر میکانزم ہونا چاہئے ۔ اس سے انصاف رسانی کا عمل تیز رفتار ہوسکتا ہے ۔ اس کانفرنس سے وزیر اعظم نریندر مودی نے بھی خطاب کیا جبکہ چیف جسٹس آف انڈیا جسٹس ٹی ایس ٹھاکر نے عدلیہ پر کام کے بوجھ کو واضح کیا تھا ۔ چیف جسٹس اس کانفرنس میں شدت جذبات سے مغلوب ہوگئے تھے ۔ اندرا کرن ریڈی نے کہا کہ تلنگانہ حکومت چاہتی ہے کہ عدالتی نظام اور کورٹس کا موثر استعمال کیا جائے تاکہ عام آدمی کو مقدمات کی تعداد میں مسلسل اضافہ سے نجات دلائی جاسکے ۔ انہوں نے کہا کہ چیف منسٹر چندر شیکھر راؤ اس سلسلہ میں کام کرنا چاہتے ہیں اور ضلع و ٹاؤنس میں عدالتوں کی تعداد میں اضافہ چاہتے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ حکومت عدالتوں کیلئے اراضی ‘ بنیادی سہولتیں اور انفرا اسٹرکچر فراہم کرنے کی حامی ہے ۔ چیف منسٹر نے حال میں لوک عدالتوں کے متوازی نظام عدلیہ پر بھی زور دیا تھا تاکہ مقدمات کی تیزی سے یکسوئی ہوسکے ۔

TOPPOPULARRECENT