Thursday , September 21 2017
Home / شہر کی خبریں / عدالتی سماعت کے قابل جرائم کے سلسلے میں ایف آئی آر کا رجسٹریشن ضروری

عدالتی سماعت کے قابل جرائم کے سلسلے میں ایف آئی آر کا رجسٹریشن ضروری

اے پی و تلنگانہ کے ڈی جی پیز کو ہائی کورٹ حیدرآباد کی ہدایت ، پولیس حکام کو پابند کیا جائے
حیدرآباد ۔ 8 ۔ دسمبر : ( ایجنسیز ) : حیدرآباد ہائی کورٹ نے پیر کو اے پی و تلنگانہ ریاستوں کے ڈی جی پیز کو ہدایت دی کہ وہ اپنی متعلقہ ریاستوں میں تمام ضلعی پولیس عہدیداروں کو ہدایات جاری کریں کہ وہ عدالتی سماعت کے قابل اور ناقابل عدالتی سماعت جرائم میں شکایات کو رجسٹر کرنے کے سلسلے میں سپریم کورٹ کی جانب سے صادر قانون کی تعمیل کریں ۔ جسٹس پی وی سنجئے کمار نے وی مہیندرا اور تین دیگر کی جانب سے دائر کردہ پٹیشن کے سلسلے میں یہ ہدایت جاری کی ۔ وہ ان کی شکایت کو رجسٹر نہ کئے جانے کے پولیس کے عمل کو چیلنج کئے تھے ۔ اس سلسلے میں جج نے کہا کہ للیتا کماری اور حکومت اترپردیش کے معاملہ میں سپریم کورٹ کے فیصلہ کے مدنظر دفعہ 154 سی آر پی سی کے مطابق ایف آئی آر کا رجسٹریشن لازمی ہے ۔ اگرچہ کمیشن آف اے کا گنیزیبل آفینس کو اطلاعات کا افشا کیا جائے اور اس صورت میں ابتدائی تحقیقات نہ ہوئی ہوں ۔ خواہ موصولہ اطلاعات عدالتی سماعت کے قابل جرم کو واضح نہ کرتے ہوں مگر یہ نشاندہی ہوتی ہو کہ تحقیقات ضروری ہیں تو ابتدائی تحقیقات کی جاسکتی ہیں ۔ یہ پتہ لگانے کے لیے کہ آیا عدالتی سماعت کے قابل جرم واضح ہے یا نہیں ۔ ابتدائی تحقیقات موقتی ہونی چاہئیں اور کسی بھی صورت میں یہ سات ایام سے زیادہ نہیں ہونی چاہئے ۔ پولیس حکام کو ان قوانین کی پابندی کرنی ہوگی ۔ کسی بھی صورت میں پولیس کو فوری طور پر معاملہ میں کارروائی کرنی ضروری ہے ۔ سپریم کورٹ نے یہ بھی کہا ہے کہ چوں کہ جنرل ڈائری / اسٹیشن ڈائری / ڈیلی ڈائری ایک پولیس اسٹیشن میں تمام موصولہ اطلاعات کا ریکارڈ ہیں ۔ تمام اطلاعات جو عدالتی سماعت کے قابل جرائم سے متعلق ہیں خواہ ایف آئی آر کے رجسٹریشن کے نتیجہ میں ہوں یا پھر کسی تحقیقات کا موجب ہوں مذکورہ ڈائری میں وقوع پذیر ہونی چاہئیں اور ابتدائی تحقیقات کرنے کا فیصلہ اس میں موجود ہونا چاہئے ۔ اپیکس کورٹ کے احکام کی یاد دہانی کرتے ہوئے جسٹس سنجئے کمار نے کہا کہ اس صورت میں جب ابتدائی تحقیقات شکایت کی مسدودی میں ختم ہوجائیں تب اس منسلکہ کی انٹری کی ایک نقل پہلے اطلاع فراہم کرنے والے کو فراہم کی جائے ۔۔

TOPPOPULARRECENT