Sunday , September 24 2017
Home / Top Stories / عدالت نے مجھ سے ناانصافی کی : ذکیہ جعفری

عدالت نے مجھ سے ناانصافی کی : ذکیہ جعفری

احمد آباد 17 جون ( سیاست ڈاٹ کام ) سابق کانگریس ایم پی احسان جعفری کی بیوہ ذکیہ جعفری نے عدالت کی جانب سے خاطیوں کو سنائی گئی سزا پر عدم اطمینان کا اظہار کیا ہے اور کہا کہ عدالت نے ان سے نا انصافی کی ہے ۔ذکیہ جعفری نے کہا کہ وہ خصوصی ایس آئی ٹی عدالت کے فیصلے کے خلاف ہائیکورٹ سے رجوع ہونگی ۔ عدالت نے آج اس کیس میں گیارہ ملزمین کو سزائے عمر قید سنائی ہے ۔ذکیہ جعفری خاص طور پر 12 خاطیوں کو صرف سات سال قید اور ایک خاطی کو صرف 10 سال قید کی سزا سنائے جانے سے بطور خاص ناراض تھیں۔ انہوں نے اس کیس میں دیگر 36 ملزمین کو بری کردئے جانے پر بھی ناراضگی کا اظہار کیا تھا ۔ ذکیہ جعفری نے کہا کہ وہ یہ سمجھنے سے قاصر ہیں کہ کیوں صرف 11 کو سزائے عمر قید دی گئی ہے اور کچھ کو صرف سات سال کی سزا سنائی گئی ہے ۔ وہ سمجھنے سے قاصر ہیں کہ منتخبہ انداز کیوں اختیار کیا گیا تھا جبکہ یہ تمام ہی اس ہجوم کا حصہ تھے جس نے سوسائیٹی کے اندر لوگوں کا قتل کیا ہے ۔ یہ غلط انصاف ہے ۔ عدالت نے ان سے نا انصافی کی ہے ۔ انہوں نے کہا کہان فسادیوں نے جس وحشتناک جرم کا ارتکاب کیا تھا اس کے پیش نظر یہ سزا کافی نہیں ہے اور کم از کم تمام خاطیوں کو عمر قید کی سزا سنائی جانی چاہئے تھی ۔
سزائیں ناکافی ‘ ہائیکورٹ سے اپیل ہوگی : ایس آئی ٹی
احمد آباد 17 جون ( سیاست ڈاٹ کام ) گلبرگ قتل عام کیس کی تحقیقات کرنے والی خصوصی تحقیقاتی ٹیم نے آج کہا کہ عدالت نے اس کیس میں جو فیصلہ سنایا ہے وہ اطمینان بخش نہیں ہے اور ایس آئی ٹیم ہائیکورٹ سے رجوع ہوگی کیونکہ اس کا احساس ہے کہ خاطیوں کو انتہائی نرم سزائیں سنائی گئی ہیں۔ ایس آئی ٹی کے وکیل آر سی کوڈیکرنے خاص طور پر اس بات پر افسوس کا اظہار کیا کہ جن گیارہ خاطیوں کو سزائے عمر قید سنائی گئی ہے اس میں موت تک کا لفظ شامل نہیں کیا گیا ہے ۔ انہوں نے کہا کہ آج کا فیصلہ اطمینان بخش نہیں ہے ۔ ہمارا احساس ہے کہ سزائیں بہت نرم ہیں اور ناکافی ہیں۔ دلائل کے دوران ہم نے مطالبہ کیا تھا کہ تمام ملزمین کو کم از کم تاحیات عمر قید سنائی جائے تاہم ایسا نہیں ہوا اور ہم ان سزاوں سے مطمئن نہیں ہیں۔ انہوں نے کہا کہ بارہ ملزمین کو صرف سات سال قید سنائی گئی جو بہت ہی کم ہے ۔ یہ سزا کم از کم دس سال یا عمر قید ہونی چاہئے ۔ انہوں نے کہا کہ ان ناکافی سزاوں کے خلاف ایس آئی ٹی ہائیکورٹ سے رجوع ہوگی ۔  استغاثہ نے اس کیس میں تمام خاطیوں کو سزائے موت سنانے کی استدعا کی تھی ۔

TOPPOPULARRECENT