Thursday , August 17 2017
Home / ہندوستان / عدم رواداری سے ملک کی یکجہتی کو خطرہ لاحق

عدم رواداری سے ملک کی یکجہتی کو خطرہ لاحق

فرقہ وارانہ واقعات پر چیف منسٹر جموں و کشمیر مفتی سعید کا اظہار تشویش

سرینگر ۔ 21 ۔ اکتوبر (سیاست ڈاٹ کام) چیف منسٹر جموں و کشمیر مفتی محمد سعید نے آج کہا کہ کثرت میں وحدت کا جذبہ ہندوستان کو اپنے مقاصد کی تکمیل تک پہنچا سکتا ہے ۔ بظاہر حالیہ فرقہ وارانہ تشدد کے واقعات کا تذکرہ کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ یہ ملک کے مفاد میں نہیں ہے جبکہ ہمارے ملک کی شناخت مشترکہ تہذیب اور ثقافت سے ہے ۔ یوم شہیدان پولیس کے موقع پر مخاطب کرتے ہوئے چیف منسٹر نے کہا کہ تکثریت ہی واحد طریقہ اور راستہ ہے جس میں ہر ایک کو شامل کیا جاتا ہے لیکن ملک میں بعض بدبختانہ واقعات پیش آرہے ہیں جو کہ ہمارے مفاد میں نہیں ہے ۔ ہمارے ملک میں مشترکہ تہذیب و ثقافت ہے اور اس جذبہ کو برقرار رکھنے کی ضرورت سے اگر ہم گمراہ ہوجائیں گے تو اپنے مقاصد کی تکمیل میں نا کام ہوجائیں گے ۔ مفتی محمد سعید نے کہا کہ عدم رواداری اور منافرت سے ہندوستان کے بنیادی اقدار پر ضرب لگے گی اور ملک کے تنوع اور یکجہتی کو خطرہ لاحق ہوجائے گا۔ انہوں نے پاکستان کا حوالہ دیتے ہوئے کہا کہ وہاں ہنوز ایک سیاسی ماڈل تلاش کیا جارہا ہے جبکہ ہندوستان نے دنیا کے سامنے ہمہ قومی اور ہمہ لسانی اتحاد کا نمونہ پیش کیا ہے۔ انہوں نے ریاستی اسمبلی میں ایک قرارداد کی اتفاق رائے منظوری پر اپوزیشن کی ستائش کی جس میں سارے ملک کو امن اور فرقہ وارانہ ہم آہنگی کا پیام دیا گیا ہے ۔ چیف منسٹر 1947 ء کے واقعات کا تذکرہ کرتے ہوئے کہا کہ ملک بھر میں فرقہوارانہ جنون کے وقت کشمیری عوام امن اور فرقہ وارانہ یکجہتی کے مشعل بردار بن گئے تھے ۔

انہوں نے سابق وزیر اعظم اٹل بہاری واجپائی کے اس قول کا حوالہ دیا کہ دوست تبدیل کئے جاسکتے ہیںلیکن پڑوسی نہیں اور کہا کہ اگر ہندوستان کو عالمی طاقت بننا ہے تو اسے تمام پڑوسیوں کے ساتھ دوستانہ تعلقات استوار کرنا چاہئے ۔ انہوں نے بتایا کہ سرحدوں پر غیر یقینی صورتحال اور تشدد کے اثرات مقامی عوام پر مرتب ہورہے ہیں اور ریاست میں حکومت کے ترقیاتی کاموں میں رکاوٹ پیدا ہورہی ہے ۔ چیف منسٹر نے شہریوں کی جان و مال کی حفاظت کیلئے پولیس کی عظیم قربانیوں کو خراج پیش کرتے ہوئے کہا کہ اسلام میں بھی امن و آشتی کا پیام دیا گیا ہے اور یہ اعادہ کیا کہ بندوق کسی بھی مسئلہ کا حل نہیں ہوسکتا۔ انہوں نے کہا کہ نہ بندوق سے نہ گولی سے ، بات بنے گی بولی سے۔ اور مجھے یہ دیکھ کر تکلیف ہوئی ہے کہ بعض عناصر اسلام کے پیام امن کو تباہ کر رہے ہیں۔ اس موقع پر سابق چیف منسٹرس فاروق عبداللہ ، عمر عبداللہ ، ریاستی وزراء ، اسمبلی اور کونسل کے صدورنشین ڈائرکٹر جنرل پولیس راجندر کمار شریک تھے۔
مفتی سعید ۔ مودی ملاقات
سرینگر ۔ 21 اکٹوبر (سیاست ڈاٹ کام) چیف منسٹر جموں و کشمیر مفتی محمد سعید نے آج وزیراعظم نریندر مودی سے ملاقات کرکے پی ڈی پی ۔ بی جے پی مخلوط حکومت کے جموں و کشمیر میں تیز رفتار ترقیاتی ایجنڈہ پر تبادلہ خیال کیا۔ پارٹی کے کنونشن سے خطاب کرتے ہوئے مفتی سعید نے کہا کہ مخلوط حکومت کا ایجنڈہ دونوں پارٹیوں کو ایک بندھن میں باندھے ہوئے ہے اور دونوں پارٹیاں ریاست میں مساوی طور پر ترقی کی خواہاں ہیں۔ مفتی سعید نے کہا کہ نئی دہلی میں وزیراعظم نریندر مودی سے ملاقات کے دوران کئی اہم مسائل پر بات چیت ہوئی اور انہوں نے مخلوط حکومت کے تیز رفتار ترقیاتی ایجنڈہ میں مرکز کی ہر ممکن مدد کا تیقن دیا۔ مفتی سعید نے ملاقات کی تفصیلات کا انکشاف کرتے ہوئے کہا کہ نیتی آیوگ نے بھی تیقن دیا ہیکہ وہ 14 ویں فینانس کمیشن کی سفارشات کے مطابق مرکزی فنڈس میں جموں و کشمیر کیلئے مختص اپنا حصہ ادا کرے گا اور ہر پیسہ ترقیاتی ایجنڈہ پر خرچ کیا جائے گا۔ چیف منسٹر نے کہا کہ مرکز زیرسرپرستی اسکیموں کی مالیت 6 ہزار کروڑ روپئے ہے۔

TOPPOPULARRECENT