Thursday , August 24 2017
Home / Top Stories / عدم پھیلاؤ ممالک کی این ایس جی رکنیت پر اختلافات

عدم پھیلاؤ ممالک کی این ایس جی رکنیت پر اختلافات

چین کا اتفاق رائے سے معاہدہ اور موضوع پر جامع مباحث پر زور ‘ کئی ممالک کے چین کے موقف سے اتفاق
بیجنگ ۔12جون ( سیاست ڈاٹ کام ) ہندوستان کو این ایس جی رکنیت کیلئے امریکہ کے دباؤ کا لحاظ کئے بغیر چین نے آج کہا کہ اعلیٰ سطحی کلب کے ارکان میں عدم پھیلاؤ معاہدہ پر دستخط نہ کرنے والے ممالک کی رکنیت کے بارے میں ’’ اختلافات برقرار‘‘ ہیں ۔ انہوں نے کہا کہ اس سلسلہ میں کوئی تبادلہ خیال نہیں ہوا ۔ ہندوستان اور دیگر ممالک کی رکنیت کے بارے میں ویانا کے اجلاس میں کوئی فیصلہ نہیں کیا گیا ۔ وزارت خارجہ چین کے ترجمان ہونگ لی نے اپنے ایک بیان میں گذشتہ ہفتہ ویانا اجلاس کا حوالہ دیتے ہوئے کہا کہ نیوکلیر سربراہ کنندہ گروپ کے موجودہ صدر ارجنٹینا کے سفیر رافیل میریانو گراسی نے ایک غیر سرکاری اجلاس 48 رکنی گروپ کا 9جون کو طلب کیا ہے ۔ صدرنشین نے کہا کہ اس اجلاس کا کوئی ایجنڈہ نہیں ہے اور یہ صرف مختلف فریقین کی رائے این ایس جی تک رسائی کے بارے میں حاصل کرے گا اور ایک رپورٹ تیار کرے گا جو این ایس جی کے پلینری اجلاس مقررہ سیول میںجاری ماہ کے اواخر میں (24جون ) کو پیش کرے گا تاہم ویانا کے سفارتی ذرائع نے کہا کہ قبل ازیں ہندوستان کی رکنیت پر اجلاس میں تبادلہ خیال کیا گیا اور بات چیت غیر مختتم رہی ۔ چین کا موقف ہے کہ نیوکلیئر عدم پھیلاؤ معاہدہ پر دستخط نہ کرنے والے ممالک کو این ایس جی میں شامل نہ کیا جائے

کیونکہ اس طرح پھیلاؤ کے انسداد کی کوششیں متاثر ہوں گی۔ این ایس جی میں ہندوستان کے داخلے پر معاہدہ کو قطعیت دینے سے پہلے چین نے جامع تبادلہ خیال کی ضرورت پر زور دیا جس کا انداز تعمیری ہو۔ چین نے نوٹ کیا کہ بعض نیوکلیئر عدم پھیلاؤ معاہدہ پر دستخط نہ کرنے والے ممالک این ایس جی میں شمولیت میں خواہاں ہیں اور اُن کی نیوکلئیر عدم پھیلاؤ معاہدہ پر دستخط نہ کرنے والے دیگر ممالک تک رسائی ہے ۔ چین کا یہ اٹل موقف ہے کہ گروپ میں داخلہ سے پہلے جامع مباحث ہونے چاہیئے ۔ اتفاق رائے پیدا کیا جانا چاہیئے اور اتفاق رائے کی بنیاد پر ہی معاہدہ ہونا چاہیئے ۔ نیوکلئیر عدم پھیلاؤ معاہدہ سیاسی اور قانونی بنیاد فراہم کرتا ہے تاکہ بین الاقوامی عدم پھیلاؤ نظام بحیثیت مجموعی کارآمد بن سکے ۔ چین کا کا موقف تمام ایسے ممالک پر عائد ہوتاہے جنہوں نے نیوکلئیر عدم پھیلاؤ معاہدہ پر دستخط نہیں کئے ہیں ۔ وزارت خارجہ چین کے ترجمان نے کہا کہ چین پاکستان کی نیوکلیئر تجارتی کلب میں شمولیت کی تائید کرتا ہے ۔ انہوں نے کہا کہ حقیقت یہ ہے کہ کئی ممالک اس گروپ میں چین کے موقف سے متفق ہیں ۔ وہ چین ‘ نیوزی لینڈ ‘ آیئرلینڈ ‘ ترکی ‘جنوبی افریقہ اور آسٹریا کی جانب سے ہندوستان کی این ایس جی کی رکنیت پر اعتراض کرچکے ہیں اور چین کے موقف سے متفق ہیں ۔ گروپ میں نیوکلئیر عدم پھیلاؤ معاہدہ پر دستخط نہ کرنے والے ممالک کو این ایس جی کی رکنیت دینے کے بارے میں بحث ہوچکی ہیں لیکن ارکان اس مسئلہ پر اختلافات رکھتے ہیں ۔

TOPPOPULARRECENT