Wednesday , September 20 2017
Home / عرب دنیا / عراقی فوج کا دولت اسلامیہ کے مستحکم گڑھ تل عفر پر قبضہ

عراقی فوج کا دولت اسلامیہ کے مستحکم گڑھ تل عفر پر قبضہ

جملہ رقبہ کے 70فیصد پر حکومت کا قبضہ بحال ‘ دولت اسلامیہ کی شرمناک شکست
تل عفر ۔ 27اگست ( سیاست ڈاٹ کام ) عراقی افواج آج دولت اسلامیہ کے مستحکم گڑھ تل عفر پر اپنا قبضہ بحال کرنے کے قریب پہنچ گئیں ۔ انہوں نے دولت اسلامیہ کے جنگجوؤں کو وسطی تل عفر سے مار بھگایا ۔ یہ آخری شہری مستحکم گڑھ تھا جہاں پر ملک میں دولت اسلامیہ کا قبضہ تھا ۔ انسداد دہشت گردی شعبہ شہر کے وسطی علاقے پر قبضہ کرچکے ہیں جن می کبھی تاریخی خلافت عثمانیہ کا دارالحکومت قائم تھا ۔ یہاں پر عراقی پرچم لہرایا گیا ۔ جنرل عبدالامیر یاراللہ نے عراقی پرچم لہرایا ۔ کمانڈر فوجی کارروائیاں تل عفر کیلئے جنگ کررہے تھے ۔ انہوں نے اپنے بیان میں کہا کہ یہ پیشرفت جو اندرون ایک ہفتہ ہوئی اور اس اہم شہر پر جارحانہ کارروائی کے بعد قبضہ کرلیا گیا ۔ وزیراعظم عراق حیدرالعبادی نے جولائی میں ہی عراق کے جہادیوں پر مکمل فتح کا یقین ظاہر کیا تھا ۔ جب کہ دوسرے بڑے شہر موصل پر قبضہ ہوا تھا جہاں سے 2014ء میں دولت اسلامیہ نے خلافت اسلامیہ ہونے کا اعلان کیا تھا ۔ عراقی فوجیں اب شہر کے 94فیصد حصہ پر قابض ہیں ۔ مشترکہ کارروائیوں کی کمان نے مخالف دولت اسلامیہ کارروائیاں عراق میں کرتے ہوئے شہر اور اس کے 29 میں سے 27اضلاع پر قبضہ کرلیا ہے ۔ کل اعلان کیا گیا کہ وزیر خارجہ فرانس اور وزیر دفاع فرانس نے بغداد کا دورہ کر کے 43کروڑ یوروز(51کروڑ 20لاکھ امریکی ڈالر ) مالیتی مدد عراقی معیشت کو دینے کا اعلان کیا ۔ کیونکہ تیل کی قیمتیں جہادیوں کے ساتھ جنگ کی وجہ سے متاثر ہوئی ہیں ۔ ہفتہ کے دن تل عفر کے شمال میں 15کلومیٹر کے فاصلہ پر دفاعی اہمیت کی سڑک پر جو شہر اور شام کی سرحد کے درمیان واقع ہے جنگ ہوئی تھی ‘ پورے تل عفر کا علاقہ 1155مربع کلومیٹر ہے جو اس کے جملہ رقبہ 1655 مربع کلومیٹر کا 70فیصد ہے ‘ مشترکہ کارروائیوں کے کمانڈر نے کہا کہ شہر سے کثیف دھویں کا بادل اٹھتا ہوا دیکھا جاسکتا ہے ۔ ہاشد الشاہی نے جو نیم فوجی مخلوط فوج کی قیادت کررہے ہیں سرکاری فوج کے ساتھ القدرا اور الجزیرہ اضلاع پر قبضہ کرلیا ہے ۔ ان کے ایک مجاہد عباس رضی نے کہا کہ دولت اسلامیہ نے پیشرفت کی کئی مقامات پر مزاحمت کی تھی تاہم ناکام رہی ۔

TOPPOPULARRECENT