Thursday , August 24 2017
Home / Top Stories / عراق میں لاپتہ ہندوستانیوں کی موت کا ثبوت نہیں:سشما

عراق میں لاپتہ ہندوستانیوں کی موت کا ثبوت نہیں:سشما

عراقی حکام اور ذرائع سے ہلاکتوں کی توثیق نہیں ہوئی، راجیہ سبھا میں حکومت کا بیان
نئی دہلی، 27 جولائی (سیاست ڈاٹ کام) وزیر خارجہ سشما سوراج نے آج کہا کہ عراق کے موصل سے تین سال پہلے لاپتہ 39 ہندوستانیوں کے زندہ ہونے یا مارے جانے کا کوئی ثبوت نہیں ہے، اس لئے وہ انہیں مردہ قرار نہیں دے سکتی ہیں۔ سشما نے راجیہ سبھا میں وقفہ صفر کے دوران کہا کہ موصل میں لاپتہ ہندوستانیوں کی تلاش کی جا رہی ہے۔ انہوں نے کہا کہ ذرائع کے مطابق لاپتہ افراد ہلاک نہیں کئے گئے ہیں۔ وہ تمام محفوظ واپس لوٹیں، اس کی وہ دعاکرتی ہیں۔ گزشتہ 17جولائی کو کانگریس کے پرتاپ سنگھ باجوا نے ایوان میں اس معاملہ کو اٹھایا تھا۔ وزیر خارجہ نے موصل میں لاپتہ لوگوں کے سلسلے میں سیاست نہ کرنے کی درخواست کرتے ہوئے کہا کہ عراق کی حکومت نے 9 جولائی کو آئی ایس آئی ایس کو موصل سے نکال باہر کرنے کا اعلان کیا تھا اور اس کے اگلے ہی دن وزیر مملکت خارجہ جنرل وی کے سنگھ کو وہاں بھیجا گیا۔انہوں نے کہا کہ عراق کے ایک اعلیٰ افسر نے بتایا کہ ہندوستانیوں کو موصل میں پکڑا گیا تھا اور ایک اسپتال کی تعمیر کے کام میں لگایا گیا تھا۔ اس کے بعد ان سے کاشت کاری کرائی گئی۔ 2016ء کے اوائل انہیں بادوش جیل منتقل کر دیا گیا۔ اس کے بعد سے ان کے بارے میں کسی کو کوئی معلومات نہیں ہے۔ سشما نے کہا کہ اس معاملے کے سلسلے میں ان کی ھرجیت مسیح سے بات ہوئی ہے اور اس نے بتایا کہ عراق میں 40 لوگوں کو یرغمال بنایا گیا تھا اور انہیں جنگل میں لے جا کر گولی مار دی گئی لیکن وہ بچ گیا۔ ھرجیت مسیح کس طرح بچا اس کی معلومات وہ نہیں دے رہا ہے اور لوگوں کو گمراہ کر رہا ہے۔ وزیر خارجہ نے کہا کہ عراق کے صدر مملکت اور وزیر خارجہ نے کہا ہے کہ ہندوستانیوں کے مارے جانے کے ثبوت نہیں ہیں اور انہوں نے یہ معلومات صدر اور وزیر اعظم کو بھی دی ہے۔ انہوں نے کہا کہ یہ خفیہ معاملہ ہے اور وہ ایوان میں ذرائع کا نام نہیں بتا سکتیں۔ انہوں نے کہا کہ ھرجیت مسیح جس دن ہندوستانیوں کے مارے جانے کی بات کہہ رہا ہے ان کے خاندان کے ارکان نے اس کے دو دن بعد اپنے گھر والوں سے بات کی ہے تو ان کے مارے جانے کے بارے میں ٹھوس ثبوت نہیں ہے۔ سشما نے تارک وطن ہندوستانیوں کے تئیں حکومت کی ذمہ داری کا ذکر کرتے ہوئے کہا گزشتہ تین سال میں بیرون ملک پھنسے 80 ہزار لوگوں کو حکومت اپنے اخراجات سے انہیں واپس لائی ہے۔

TOPPOPULARRECENT