Wednesday , August 23 2017
Home / Top Stories / عراق کے قدیم شہر نمرود پر حکومت کا قبضہ بحال

عراق کے قدیم شہر نمرود پر حکومت کا قبضہ بحال

REFILE - CORRECTING GRAMMARSyrian Kurdish fighters ride in a military vehicle in the town of Bashiqa, after it was recaptured from the Islamic State, east of Mosul, Iraq, November 12, 2016. REUTERS/Azad Lashkari

نمرود ۔ /15 نومبر (سیاست ڈاٹ کام) عراق کی سرکاری فوج نے قدیم شہر نمرود پر حکومت کا قبضہ بحال کردیا ہے لیکن دولت اسلامیہ گروپ نے اس کے تاریخی آثار قدیمہ کو زبردست نقصان پہونچایا ہے ۔ شہر کا دورہ کرنے والے ایک صحافی نے کہا کہ مجسمہ توڑ کر بکھیر دیئے گئے ہیں ۔ محل تباہ کردیا گیا ہے ۔ اس کو ازسرنو تعمیر کرنے کی ضرورت ہے ۔ قدیم دنیا کا 50 میٹر بلند مجسمہ اب توڑکر بہت چھوٹا کردیا گیا ہے ۔ عراقی فوج نے اعلان کیا کہ نمرودکا سنگ بنیاد 13 ویں صدی عیسوی میں رکھا گیا تھا اور بعد ازاں یہ اسیرائی سامراج کا دارالحکومت بن گیا اس پر حکومت کا قبضہ اتوار کے دن بحال ہوا ۔ یہ دولت اسلامیہ کے زیرقبضہ عراق کا آخری شہر تھا ۔

TOPPOPULARRECENT