Thursday , October 19 2017
Home / Top Stories / عراق کے گرین زون میں مظاہرین گھس پڑے، سکیوریٹی فورسس کی فائرنگ

عراق کے گرین زون میں مظاہرین گھس پڑے، سکیوریٹی فورسس کی فائرنگ

متعدد ہلاکتوں کی اطلاع، بغداد میں کرفیو نافذ ، وزیراعظم کے دفتر پر مقتدیٰ الصدر کے حامیوں کا حملہ، حیدر العبادی کا انتباہ

بغداد۔ 21 مئی ۔(سیاست ڈاٹ کام) عراق میں سکیوریٹی فورسس نے بغداد کے انتہائی سخت سکیوریٹی کے حامل گرین زون اور کابینہ کی عمارت میں گھسنے والے مظاہرین پر فائرنگ کی جس میں کئی افراد کے ہلاک ہونے کی اطلاع ہے۔ گرین زون انتہائی سخت سکیوریٹی کا حامل علاقہ ہے جہاں پارلیمنٹ، سرکاری عمارتیں اور متعدد غیر ملکی سفارت خانے واقع ہیں۔ عینی شاہدین نے بتایا کہ سکیوریٹی فورسس نے آنسو گیاس کا بھی استعمال کیا جس میں کئی مظاہرین زخمی ہوئے۔ فوج نے بتایا کہ سکیوریٹی اہل کاروں پر مظاہرین نے چاقو سے حملہ کیا تھا۔ عراقی وزیراعظم حیدر العبادی کے دفتر سے جاری ہونے والے ایک بیان میں کہا گیا ہے کہ گذشتہ روز بلوائیوں کے ایک گروپ نے دفتر پر چڑھائی کی کوشش کی جس کے بعد دارالحکومت میں کرفیو لگا دیا گیا ۔ عراقی حکومت کے زیرانتظام میڈیا وار سیل کی جانب سے جاری کردہ ایک بیان میں دعویٰ کیا گیا ہے کہ تخریب کار عناصر کے ایک گروپ نے دستی ہتھیاروں اور چاقوؤں کے ذریعے گرین زون میں سیکیورٹی پر مامور اہلکاروں پرحملے کے بعد وزیر اعظم کے دفتر پر بھی چڑھائی کی ہے جس کے بعد حکومت نے دارالحکومت میں غیرمعینہ مدت کیلئے کرفیو لگا دیا ہے۔

بیان میں کہا گیا ہے کہ شرپسند عناصر کی جانب سے کیے گئے حملے میں متعدد حکومتی اور سکیورٹی اہلکار زخمی ہوئے ہیں اورانہیں علاج کیلئے بغداد کے اسپتالوں میں منتقل کردیا گیا ہے۔ زخمیوں میں سے بعض کی حالت تشویشناک بیان کی جاتی ہے۔درایں اثناء بغداد آپریشنل کمانڈ کی جانب سے دارالحکومت میں قانون نافذ کرنے والے تمام اداروں کو ہدایت کی ہے کہ وہ بغداد میں داخل ہونے والی تمام گاڑیوں کی باریک بینی سے چیکنگ کریں۔ ایسی کسی گاڑی کو جس میں مسلح افراد سوار ہوں، دارالحکومت میں داخل ہونے سے سختی سے روکا جائے۔خیال رہے کہ بغداد میں سکیورٹی کے سخت ترین انتظامات کی تازہ ہدایات ایک ایسے وقت میں جاری کی گئی جب اخبارات نے یہ خبر دی تھی کہ سرکردہ شیعہ رہنما مقتدیٰ الصدر کے ماتحت السلام عسکری گروپ کے عناصر کو ان اسپتالوں کے قریب دیکھا گیا ہے جہاں زخمی مظاہرین کو منتقل کیا گیا ہے۔ حکومت نے بغداد میں غیرمعینہ مدت کے کرفیو کا اعلان اس وقت کیا جب مقتدیٰ الصدر کے جامی کل  گرین زون میں گھس کر وزیراعظم حیدر العبادی کے دفتر پر چڑھائی کردی تھی۔شیعہ مسلم رہنما مقتدی الصدر کے حامی ملک میں بدعنوانیوں پر قابو پانے اور سکیوریٹی فراہم کرنے میں حکومت کی ناکامی پر صدائے احتجاج بلند کررہے ہیں۔ وزیراعظم حیدرالعبادی نے رات دیر گئے ٹیلیویژن پر خطاب کرتے ہوئے مظاہرین کے گرین زون میں گھسنے کی مذمت کی اور افرا تفری پھیلانے والوں کو خبردار کیا۔ واضح رہے کہ اپریل میں بھی احتجاجی مظاہرین نے پارلیمنٹ پر حملہ کردیا تھا۔

TOPPOPULARRECENT