Thursday , August 24 2017
Home / عرب دنیا / عرب اتحاد کا یمن کے اسکول پر حملہ ‘ 10بچے ہلاک

عرب اتحاد کا یمن کے اسکول پر حملہ ‘ 10بچے ہلاک

قرآنی اسکول پر حملہ سے ہلاکتیں ‘ 18بچے زخمی ‘ حوثیوں کا شدید ردعمل
صنعا۔14اگست ( سیاست ڈاٹ کام ) عرب اتحاد نے یمن کے ایک اسکول پر باغیوں کے زیرقبضہ صوبہ شمالی یمن میں 10بچوں کو ہلاک کردیا ۔ جب کہ دیگر 28 زخمی ہوگئے ۔ ’’سرحدوں سے ماورا ڈاکٹرس ‘‘ نامی تنظیم نے کہا کہ 10بچوں کی نعشیں اور 28زخمی بچے جن میں سے تمام کی عمر 15سال سے کم ہے ‘ فضائی حملوں کا شکار ہوئے جو ہیدان میں قرآنی اسکول پر کئے گئے تھے ۔ صوبہ سعدہ کے ترجمان ملک شہر نے کہا کہ یہ حملہ ہفتہ کے دن کیا گیا ۔ شہر نے کہا کہ ایم ایس ایف کو فیلڈ ہاسپٹل میں جو اسکول کے قریب ہے بچوں کی نعشیں اور زخمی بچے دستیاب ہوئے ۔ قبل ازیں انہیں ایک سرکاری اسپتال میں منتقل کیا گیا تھا ۔ ایران کے حمایت یافتہ حوثی باغیوں نے تصویریں اور ویڈیو جھلکیاں مردہ بچوں اور خون میں لت پت بچوں کی تصویریں جنہیں بلانکٹس میں لپیٹ دیا گیا تھا فیس بک پر شائع کردیں ۔ حوثی کے ترجمان محمد عبدالسلام نے کہا کہ جنگی طیاروں نے جمعہ بن فضبیل اسکول پر حملہ کیا ۔ اس کو ایک گھناؤنا جرم قرار دیا گیا ہے ۔

اقوام متحدہ کے ادارہ برائے اطفال یونیسیف نے حملہ کی توثیق کرتے ہوئے انتباہ دیا کہ پورے ملک میں گذشتہ ہفتہ سے تشدد میں اضافہ ہوگیا ہے ۔ ہلاک اور زخمی ہونے والے بچوں کی تعداد سڑکوں پر لڑنے والوں اور زمینی سرنگ دھماکوں سے ہلاک ہونے والوں کی بہ نسبت نمایاں طور پر زیادہ ہوگئی ہے ۔ یونیسیف نے تمام فریقین سے اپیل کی ہے کہ وہ ان کی ذمہ داریاں پوری کریں جو بین الاقوامی قانون کے تحت اُن پر عائد ہوتی ہیں ۔ ان ذمہ داریوں میں صرف لڑائی میں شرکت کرنے والے افراد کو حملوں کا نشانہ بنانا بھی شامل ہے ۔ شہریوں اور شہری انفراسٹرکچرس پر محدود حملے ہوسکتے ہیں ۔ سعودی عرب نے جون میں اپنے ملک کو سیاہ فہرست میں شامل کرنے کے اقوام متحدہ کے فیصلے پر شدید برہمی کا اظہار کیا ہے اور کہا تھا کہ 785 بچوں کی گذشتہ سال یمن میں ہلاکتیں واقع ہوئیں جن میں سے 60فیصد ہلاکتوں کا ذمہ دار عرب اتحاد تھا ۔اقوام متحدہ کے سربراہ بانکی مون نے سعودی عرب پر الزام عائد کیا ہے کہ اُس نے اقوام متحدہ کے امدادی پروگراموں کی مدد بند کردینے کی دھمکی دی ہے۔
اگر اُس کو سیاہ فہرست میں شامل کیا جائے ۔ سعودی عرب نے  اس الزام کی تردید کردی ہے ۔ اقوام متحدہ کے بموجب یمن میں 6400افراد جن میں سے بیشتر بچے ہیں ہلاک ہوچکے ہیں ۔

TOPPOPULARRECENT