Wednesday , August 23 2017
Home / ہندوستان / عشرت جہاں مقدمہ تحقیقاتی عہدیدار کو موجودہ عہدہ سے ہٹادیا گیا

عشرت جہاں مقدمہ تحقیقاتی عہدیدار کو موجودہ عہدہ سے ہٹادیا گیا

نئی دہلی ۔ 5 جولائی (سیاست ڈاٹ کام) آئی پی ایس آفیسر ستیش سنگھ کو بحیثیت چیف ویجلنس آفیسر نارتھ ایسٹرن الیکٹریکل پاور کارپوریشن مرکز نے معزول کردیا ہے۔ وہ عشرت جہاں مقدمہ کی تحقیقات کرنے والی اسپیشل انوسٹی گیشن ٹیم (ایس آئی ٹی) کے رکن بھی رہ چکے ہیں۔ انہیں تین سالہ میعاد کیلئے اگست 2014ء میں اس عہدہ پر فائز کیا گیا تھا۔ انہیں غیرحاضری اور غلط طرز عمل کی بنا دو مرتبہ نوٹس وجہ نمائی جاری کی گئی تھی جس کے بعد موجودہ میعاد میں تخفیف کا فیصلہ کیا گیا۔ ڈپارٹمنٹ آف پرسونل اینڈ ٹریننگ نے ایک بیان میں کہا کہ ستیش ورما کی خدمات وزارت داخلہ کے حوالے کردی گئیں۔ ستیش شرما 1986ء بیاچ کے گجرات کیڈر سے تعلق رکھنے والے آئی پی ایس آفیسر ہیں۔ گجرات ہائیکورٹ نے عشرت جہاں انکاونٹر مقدمہ کی تحقیقات کے لئے جو سہ رکنی ایس آئی ٹی تشکیل دی وہ بھی اس کا حصہ تھے۔ انہوں نے دیگر دو ارکان سے الگ موقف اختیار کرتے ہوئے ہائیکورٹ میں حلفنامہ داخل کیا تھا اور کہا کہ یہ انکاونٹر ایک طئے شدہ منصوبہ تھا۔ انہوں نے عشرت جہاں کے ممنوعہ لشکرطیبہ سے تعلق پر بھی شبہات ظاہر کئے تھے۔ انہوں نے چند دن قبل میڈیا کو دیئے گئے ایک انٹرویو میں بھی کہا تھا کہ یہ انکاؤنٹر پہلے سے طئے شدہ منصوبہ کے تحت تھا۔ اسکے علاوہ عشرت جہاں کو دہشت گرد قرار دیئے جانے سے اختلاف کیا تھا۔

TOPPOPULARRECENT