Wednesday , October 18 2017
Home / ہندوستان / عشرت مسئلہ پر کانگریس نے قومی سلامتی پر سمجھوتہ کیا

عشرت مسئلہ پر کانگریس نے قومی سلامتی پر سمجھوتہ کیا

لوک سبھا میں بی جے پی کا الزام ۔ لاپتہ دستاویزات سے متعلق سوال
نئی دہلی 25 اپریل ( سیاست ڈاٹ کام ) بی جے پی نے آج لوک سبھا میں عشرت جہاں انکاؤنٹر مسئلہ اٹھایا اور یو پی اے پر الزام عائد کیا کہ اس نے ایک دہشت گرد کو شہید قرار دیتے ہوئے قومی سلامتی پر سمجھوتہ کیا تھا ۔ وقفہ صفر کے دوران یہ مسئلہ اٹھاتے ہوئے کیرت سومیا نے یہ جاننا چاہا کہ آیا عشرت جہاں کیس میں چار دستاویزات کے غائب ہوجانے کا جائزہ لینے والی سرکاری کمیٹی نے اپنی رپورٹ پیش کی ہے یا نہیں۔ انہوں نے الزام عائد کیا کہ سابق وزیر داخلہ نے عشرت جہاں کو پہلے حلف نامہ میں دہشت گرد قرار دیا تھا تاہم بعد میں انہوں نے دوسرے حلفنامہ میں اپنے موقف کو بدل دیا ۔ سومیا نے ایک اور وزیر داخلہ کا نام بھی لیا جو یو پی اے دور میں برسر کار تھے تاہم اسپیکر سمترا مہاجن نے انہیں ایوان میں کسی کا نام لینے سے منع کردیا ۔ کانگریس لیڈر ملکارجن کھرگے نے اس مسئلہ پر اظہار خیال کرتے ہوئے حکومت کو نشانہ بنایا اور کہا کہ کس طرح اس مسئلہ کو موضوع بنانے کی اجازت دی جاسکتی ہے جبکہ یہ مسئلہ بھی اترکھنڈ میں صدر راج کے مسئلہ کی طرح عدالت میں ہنوز زیر تصفیہ ہے ۔ سمترا مہاجن نے کہا کہ بی جے پی رکن نے صرف ایک سوال کیا ہے ۔

TOPPOPULARRECENT