Sunday , July 23 2017
Home / ہندوستان / عصمت ریزی کے ملزم سابق وزیر پرجاپتی کی ضمانت

عصمت ریزی کے ملزم سابق وزیر پرجاپتی کی ضمانت

لکھنؤ 25 اپریل (سیاست ڈاٹ کام) اترپردیش کے ایک سابق وزیر گیاتری پرجاپتی اور ان کے دو ساتھی ملزمین کو ایک عدالت نے آج یہاں ضمانت دے دی۔ جنسی جرائم سے بچوں کو محفوظ رکھنے سے متعلق عدالت (پوکسو) کے ایک خصوصی جج اوم پرکاش مشرا نے پرجاپتی، وکاس ورما اور امریندر سنگھ عرف منٹو کی ضمانت منظور کی۔ عدالت نے پرجاپتی کو ایک لاکھ روپئے فی کس کی دو ضمانتیں اور اتنی ہی رقم کے مماثل شخصی مچلکہ پیش کرنے کی ہدایت کی۔ سپریم کورٹ کی ہدایت پر پرجاپتی اور دیگر چھ افراد کے خلاف 17 فروری کو ایف آئی آر درج کیا گیا تھا۔ 49 سالہ پرجا پتی کو تقریباً ایک ماہ تک مفرور رہنے کے بعد 15 مارچ کو یہاں گرفتار کیا گیا تھا اور 2014 ء میں ایک عورت کی عصمت ریزی کرنے اور اس کی کمسن بیٹی کی عصمت ریزی کی کوشش کرنے کے الزام پر جیل بھیج دیا گیا تھا۔ اس ضمن میں دیگر چھ افراد کو پہلے ہی گرفتار کیا جاچکا تھا۔ پرجاپتی اپنی گرفتاری پر حکم التواء کے لئے سپریم کورٹ سے رجوع ہوا تھا لیکن عدالت عظمیٰ نے متعلقہ عدالت میں درخواست دائر کرنے کی ہدایت کی تھی۔ پرجاپتی نے اپنی گرفتاری کے موقع پر دعویٰ کیا تھا کہ وہ بے قصور ہے اور ان کا کردار مسخ کرنے کی سازش کے طور پر یہ الزامات عائد کئے گئے ہیں۔ سابق وزیر نے کہاکہ سچائی کو ثابت کرنے کے لئے وہ نارکو ٹسٹ کے لئے تیار ہیں اور مبینہ کمسن متاثرہ لڑکی پر بھی یہ معائنہ کیا جانا چاہئے۔ حالیہ اسمبلی انتخابات میں پرجاپتی کو حلقہ امیٹھی میں بی جے پی امیدوار کے مقابلہ شکست ہوئی تھی۔

Leave a Reply

TOPPOPULARRECENT