Friday , October 20 2017
Home / شہر کی خبریں / علامہ اقبال کے افکار و نظریات سرچشمہ وجدان

علامہ اقبال کے افکار و نظریات سرچشمہ وجدان

ترانہ ہند کو ہر دل میں بسانے کی ضرورت ، جناب زاہد علی خاں کی تقریر
حیدرآباد ۔ 10 ۔ نومبر : ( دکن نیوز ) : جناب زاہد علی خاں ایڈیٹر روزنامہ سیاست نے علامہ اقبال کو بیسویں صدی کا بلند پایہ اور عظیم شاعر قرار دیتے ہوئے کہا کہ ان کے افکار و نظریات موجودہ عہد میں بھی سرچشمہ وجدان ہیں ۔ انہوں نے کہا کہ اقبال کا ترانہ ہندی ’ سارے جہاں سے اچھا ہندوستان ہمارا ‘ تقسیم ہند سے پہلے لکھا گیا تھا لیکن آج بھی یہ ترانہ برصغیر میں ہی نہیں بلکہ دنیا کے مختلف خطوں میں آباد اردو کی نئی بستیوں میں مقبول و مشہور ہے ۔ جناب زاہد علی خاں ، محبوب حسین جگر ہال احاطہ روزنامہ سیاست میں یاد اقبال کے موقع پر منعقدہ نغمہ و شعر کے پروگرام میں صدارتی تقریر کررہے تھے ۔ مشہور گلوکار خان اطہر کے ترتیب دئیے گئے اس پروگرام میں جناب افتخار حسین سکریٹری فیض عام ٹرسٹ ، جناب سید شاہ نور الحق قادری ایڈوکیٹ سابق صدر نشین اردو اکیڈیمی ، صوفی سلطان شطاری ، انجی کمار گوئل نے مہمانان خصوصی کی حیثیت سے شرکت کی ۔ جناب عابد صدیقی نے علامہ اقبال کی شخصیت اور ان کی شاعری پر جامع تقریر کی اور پروگرام کی نظامت کی ۔ جناب زاہد علی خاں نے اپنی تقریر کے سلسلہ کو جاری رکھتے ہوئے کہا کہ علامہ اقبال کے اس ترانے کے اشعار اگر ہر ہندوستانی کے دل میں بس جائیں تو ملک میں دادری جیسا واقعہ نہیں ہوگا ۔ انہوں نے اقبال کی عظمت کا ذکر کرتے ہوئے کہا کہ جب وہ پاکستان گئے تھے تو انہیں لاہور میں اقبال کی مزار پر حاضری دینے کا شرف حاصل ہوا ۔ ہندوستان لوٹتے ہوئے ان کے پاکستانی میزبان نے کہا کہ آپ لتا منگیشکر کو ہمیں دے دیں جس پر جناب زاہد علی خاں نے ان سے برجستہ کہا کہ اگر آپ علامہ اقبال کو واپس کرتے ہیں تو ہم لتا منگیشکر کو آپ کے حوالے کردیں گے ۔ انہوں نے کہا کہ اقبال کے کلام کو ساز پر پیش کرنا اتنا آسان نہیں ہے اور خان اطہر نے جو کوشش کی ہے وہ ہر اعتبار سے قابل تعریف ہے ۔ جناب زاہد علی خاں نے کہا کہ علامہ اقبال سے قیام لندن کے دوران جب ان کے فرزند جاوید نے ان سے وائلن لانے کی فرمائش کی تو اقبال نے ان کے لیے نصیحت آمیز نظم جاوید نامہ نذر کیا ۔ یاد اقبال پروگرام میں خان اطہر نے علامہ اقبال کی کئی غزلوں و نظموں کو اپنی مخصوص و دلسوز آواز میں گا کر سامعین سے داد و تحسین حاصل کی ۔ مشہور فنکار سلیم خان نے بھی اقبال کی تحریر کردہ نظم دعا پیش کی ۔ غزل کے اس پروگرام میں سازوں پر سنگت مبارک کریم ، سید یحییٰ ، رمیش مورے ، راجیش و سردار خان نے کی ۔ اس پروگرام میں اقبال کے پرستاروں اور باذوق سامعین کی بڑی تعداد نے شرکت کی ۔۔

TOPPOPULARRECENT