Thursday , September 21 2017
Home / اضلاع کی خبریں / علم نور ہے ، گنہگاروں کو حاصل نہیں ہوتا

علم نور ہے ، گنہگاروں کو حاصل نہیں ہوتا

راماگنڈم /13 جنوری ( ذریعہ فیاکس ) ایف ایم فنکشن ہال راما گنڈم میں منعقدہ جلسہ اصلاح معاشرہ و میلادالنبی ﷺ برائے خواتین سے خطاب کرتے ہوئے ڈاکٹر مفتے ہرضوانہ زرین مومناتی پرنسپل و شیخ الحدیث جامعتہ المومنات نے کہا کہ علم کی تلاش کرنے والا رحمت کی تلاش کرنے والا ہے ۔ عالم کو لازم پکڑو اس لئے کہ علم مومن کا گہرا دوست ہیجو علم سے زندہ ہوگا وہ کبھی نہیں مرے گا ۔ ہر چیز کا ایک راستہ ہے اور جنت کا راستہ علم ہے ۔ علم انبیاء علیہ السلام کی میراث ہے ایک ساعت علم حاصل کرنا رات بھر کی عبادت سے بہتر ہے ۔ جس نے علم دین حاصل کیا اللہ تعالی اس کی روزی اپنے ذمہ کر لیتا ہے ۔ علم نور ہے گنہگار کو حاصل نہیں ہوگا ۔ طالب علم کو اچہئے کہ سچ کے دامن کو تھامیں جھوٹ سے نفرت کریں ، سچ میں برکت ہے جھوٹ میں نقصانات ہیں ۔ اللہ تعالی ارشاد فرماتا ہے کہ جھوٹ پر اللہ کی لعنت ہے ، حصول علم کے ساتھ تقوی پرہیز گاری ، ضروری ہے ۔ عالم عمل سے ہے جو علم پر عمل کرے گا وہ دنیا و آخرت میں سرخروئی حاصل کرے گا ۔ ابن عمرؓ سے روایت ہے اچھا سوال آدھا علم ہے حضور ﷺ نے ارشاد فرمایا علم کا حاصل کرنا ہر مسلمان مرد و عورت پر فرض ہے ۔ علم اسلام کا کھنبا ہے علم عبادت سے بہتر ہے ۔ موجودہ دور میں لڑکیوں کا تعلیم یافتہ ہونا ضروری ہے ۔ علم کے ذریعہ جہالت کا خاتمہ ہوتا ہے علم کے ذریعہ اللہ تعالی درجات کو بلند کرتا ہے ، قوموں کے عروج و زوال میں علم کو بہتر زیادہ اہمیت دی گئی ہے ۔ موجودہ دور میں محلوط تعلیم نے ہمارے معاشرے کا شیرازہ بکھیر دیا حصول علم کے نام سے ہمارے بچے گھروں سے نکل رہے ہیں لیکن اس کی آڑ میں کئی قسم کی خرابیاں و برائیوں میں ملوث ہو رہے ہیں والدین پر بھاری ذمہ داری عائد ہوتی ہے کہ وہ اپنی آغوش میں پلنے والوں بچوں کو صحیح تربیت کریں اور انہیں جہنم کی آگ سے محفوظ رکھیں ۔ مفتیہ سیدہ غوثیہ شاہد نائب مفتیہ جامعتہ المومنات نے کہا کہ اللہ نے ہر نبی کو معجزے عطا کئے ہیں لیکن حضور ﷺ کو سر سے لیکر پیر تک معجزہ بناکر بھیجا ، انگلی کے اشارے سے چاند کے دو ٹکڑے ہونا ، ڈوبا ہوا سورج کا لوٹ آنا ، انگلیوں سے پانی کے چشمہ کا بہنا وغیرہ ۔ مفتیہ شاہناز فاطمہ ، مومناتی معلمہ جامعتہ المومنات نے کہا کہ حضرت عائشہ صدیقہؓ روایت کرتی ہیں حضور ﷺ نے فرمایا جبرائیل میرے پاس آئے اور پڑوسیوں کے متعلق اتنی تاکید کی کہ میں گمان کیا کہ ان کو وارثت میں حصہ دار بنایا جائے گا ۔ پڑوسی جب بیمار ہوتو اس کی عیادت کریںجب مرجائے تو اس کے جنازہ میں شریک ہونا چاہئے ۔ مفتیہ عطیہ فاطمہ معلمہ جامعتہ المومنات نے کہا کہ اللہ کے ذکر میں دلوں کا اطمینان ہے اللہ نے دنیا میں جتنی چیزوں کوپیدا کیا ہے وہ تمام اللہ کے ذکر میں مصروف ہیں ۔ مفتیہ صوفیہ ناز معلمہ جامعتہ المومنات نے کہا کہ اتباع رسول میں دین و دنیا کی بے شمار نعمتیں موجود ہیں ۔ دل کو سکون ملتا ہے ، روح میں تازگی ایمان میں استقامت ، درجات میں بلندی نیکیوں میں اضافہ ہوتا ہے ۔ ذات حق سے قرب حاصل ہوتا ہے ۔ قاریہ شکیلہ کوثر مومناتی نے کہا کہ جس طرح دین ا سلام کو فروغ دینے میں مردوں نے اپنی جانوں کو قربان کیا ۔ اسی طرح اسلامی خواتین نے بھی نہ صرف اپنی جان و مال بلکہ اپنی اولاد کو بھی راہ مولی میں دین کی خاطر قربان کردیا ۔ اسلام کی سب سے پہلی شہیدہ حضرت سمیہؓ ہیں ۔ قاریہ نکہت خاتون نے کہاکہ حضور ﷺ کی تشریف آوری امت کیلئے ہی نہیں بلکہ سارے عالم کیلئے رحمت ہے ۔ جلسہ کا آغاز قرات کلام پاک اور نعت شریف سے ہوا ۔ نظامت کے فرائض مفتیہ رقیہ شکیل نائب شیخ الفقہ جامعتہ المومنات نے انجام دئے دعاء و سلام پر جلسہ اختتام عمل میں لایا گیا ۔

TOPPOPULARRECENT