Thursday , March 23 2017
Home / کھیل کی خبریں / علیم ڈار کی پاکستانی ڈومیسٹک کرکٹ کے نظام پر تنقید

علیم ڈار کی پاکستانی ڈومیسٹک کرکٹ کے نظام پر تنقید

لاہور ۔9 فروری (سیاست ڈاٹ کام )آئی سی سی ایلیٹ پینل کے امپائر علیم ڈار نے پاکستان میں ڈومیسٹک کرکٹ کے نظام کو شدید تنقید کا نشانہ بنایا کہا کہ جب تک کرکٹ بورڈ ڈومسٹک کی سطح پر ووٹنگ سسٹم کو ختم نہیں کرتا ملک میں اچھے کھلاڑی نظر انداز ہوتے رہیں گے۔لاہور میں میٹ دی پریس کے دوران اسپورٹس رپورٹرز سے گفتگو کرتے ہوئے علیم ڈار نے کہا کہ وہ کرکٹر بننا چاہتے تھے لیکن امپائرنگ میں چلے گئے لیکن اس شعبے میں بھی پوری دیانتداری کے ساتھ کام کرنے کی کوشش کی۔پسندیدہ سیریز کے بارے میں سوال پر علیم ڈار نے کہا کہ ایشز سیریز ان کیلئے ہمیشہ چیلنج ہوتی ہے لیکن ورلڈ کپ 2011 ان کے لئے سب سے یادگار ٹورنمنٹ تھا۔علیم ڈار کے بموجب پاکستان میں معیار تعلیم اور بنیادی سطح پر کرکٹ بہتر کرنے کی ضرورت ہے ورنہ اچھے ثمرات سامنے آنا مشکل ہے۔ریکارڈ 332  میچز میں امپائرنگ کا وسیع تجربہ رکھنے والے 48 سالہ امپائر علیم ڈار نے ملک میں موجود کرکٹ کے نظام کو تنقید کا نشانہ بناتے ہوئے کاہ کہ ملک میں موجود بنیادی سطح سے بہت سے بہترین کرکٹرز نظر انداز ہو رہے ہیں، پی سی بی کو چاہیے کہ کلب کی سیاست سے قطعہ نظر نواجون کھلاڑیوں کے انتخاب کو یقینی بنائے۔ ووٹنگ سسٹم کی وجہ سے بہت سے ایسے کھلاڑی ہیں جن کا انتخاب نہیں ہوتا، یہاں ایسے ایسے کلبز ہیں جہاں کرکٹ نہیں ہوتی لیکن ووٹ ڈالنے آ جاتے ہیں اور اپنے پسندیدہ کرکٹرز کو پسند کر لیا جاتا ہے۔کرکٹ میں ٹیکنالوجی کے بڑھتے رجحان پر علیم ڈار نے کہا کہ وہ ہمیشہ سے کرکٹ میں ٹیکنالوجی کے حق میں ہیں اور اسی لئے وہ تین سال سے ٹی ٹوئنٹی کرکٹ میں بھی ریویو سسٹم لانے کیلئے کوشش کر رہے تھے۔

Leave a Reply

TOPPOPULARRECENT