Tuesday , September 26 2017
Home / ہندوستان / علیگڑھ مسلم یونیورسٹی کے حکام کو ٹیچرس اسوسی ایشن کا انتباہ

علیگڑھ مسلم یونیورسٹی کے حکام کو ٹیچرس اسوسی ایشن کا انتباہ

علیگڑھ ۔ 20 ۔ نومبر : ( سیاست ڈاٹ کام ) : فیڈریشن آف سنٹرل یونیورسٹیز اسوسی ایشن کے قائدین نے آج علیگڑھ یونیورسٹی کے حکام کو خبردار کیا ہے کہ اگر اساتذہ کے جمہوری حقوق بحال نہیں کئے گئے تو ملک بھر میں احتجاج شروع کردیا جائے گا ۔ اے ایم یو ٹیچرس کلب میں اساتذہ اور ملازمین کو مخاطب کرتے ہوئے اسوسی ایشن کے صدر پروفیسر نندیتا نارائن نے الزام عائد کیا ۔ علیگڑھ مسلم یونیورسٹی ٹیچرس اسوسی ایشن کے سکریٹری مصطفی زیدی کی معطلی نہ صرف غیر جمہوری ہے بلکہ یونیورسٹی کے وائس چانسلر کے آمرانہ روش کا مظہر ہے ۔ انہوں نے بتایا کہ یونیورسٹی کے داخلوں اور تقررات میں بے قاعدگیوں اور کیمپس میں امن و قانون کی ابتری کے خلاف صدائے احتجاج بلند کرنے پر اساتذہ کو ہراساں کیا جارہا ہے ۔ محترمہ نندیتا نارائن نے کہا کہ فی الحال حقیقی چیلنج ملک میں اعلیٰ تعلیم کے اداروں کو تجارتی اور قابل فروخت شئے بنانے کا ہے ۔ جس کے خلاف متحدہ جدوجہد کی ضرورت ہے ۔ انہوں نے بتایا کہ اگر قوم کا شعور بیدار نہیں ہوا تو بین الاقوامی مالیاتی فنڈ ، عالمی بنک اور عالمی تنظیم تجارت جیسے بیرونی اداروں کی مداخلت اور تسلط سے ملک کا تعلیمی نظام تباہ ہوجائے گا ۔انہوں نے نریندر مودی حکومت کی نئی تعلیمی پالیسی کے خلاف متحدہ جدوجہد کی ضرورت کو اُجاگر کیا ہے اور کہا کہ سودیشی تحریک کے حامی اب بیرونی آقاؤں کے دباؤ میں آگئے ہیں۔

TOPPOPULARRECENT