Saturday , August 19 2017
Home / شہر کی خبریں / عمارات حج ہاوز پر وقف بورڈ کے سائن بورڈ تبدیل

عمارات حج ہاوز پر وقف بورڈ کے سائن بورڈ تبدیل

تلنگانہ وقف کا بورڈ آویزاں ، آندھرا پردیش کا بورڈ برخواست ، عارضی دفتر برقرار
حیدرآباد ۔ 4۔ اگست (سیاست  نیوز) وقف بورڈ کی تقسیم کے 6 ماہ بعد آخر کار حج ہاؤز کے سائن بورڈ تبدیل ہوئے ہیں۔ حج ہاؤز کی عمارت جو تلنگانہ وقف بورڈ کی ملکیت ہے، گزشتہ 6 ماہ سے اس پر آندھراپردیش وقف بورڈ کا بورڈ آویزاں تھا جبکہ آندھراپردیش کے دفاتر عارضی طور پر اس عمارت میں قائم ہیں اور عمارت پر آندھراپردیش کا کوئی حق نہیں۔ وقف بورڈ کی تقسیم کے بعد مختلف گوشوں سے سائن بورڈ کی تبدیلی کے سلسلہ میں بارہا توجہ دلائی گئی اور روزنامہ سیاست نے رپورٹ شائع کی تھی جس کے بعد عہدیداروں نے نئے بورڈ کی تیاری کا کام شروع کیا اور ایک ایجنسی کو یہ کام سونپا گیا۔ حج ہاؤز کے اہم باب الداخلہ پر موجود آندھراپردیش وقف بورڈ کا سائن بورڈ نکال دیا گیا ہے اور اسے زیر تعمیر عمارت کے پاس محفوظ کردیا گیا۔ اس کی جگہ تلنگانہ اسٹیٹ وقف بورڈ کا نیا بورڈ آویزاں کردیا گیا۔ یہ بورڈ تینوں زبانوں میں لکھا گیا ہے۔ بتایا جاتا ہے کہ حج ہاؤز کے دوسرے باب الداخلہ پر آندھراپردیش کے عہدیداروں نے اپنا بورڈ آویزاں کرنے کا فیصلہ کیا ہے جس کے لئے تعمیری کام جاری ہے۔ اس طرح عمارت کے دونوں باب الداخلوں پر دونوں ریاستوں کے سائن بورڈ آویزاں رہیں گے۔ تلنگانہ کے عہدیداروں کا ماننا ہے کہ آندھراپردیش کیلئے علحدہ سائن بورڈ کی ضرورت نہیں کیونکہ عمارت میں ان کا قیام عارضی طور پر ہے۔ اس کے علاوہ عمارت کی ملکیت پر آندھراپردیش کا کوئی حق نہیں۔ ایک عہدیدار نے کہا کہ آندھراپردیش عملاً تلنگانہ میں کرایہ دار کے طور پر ہیں ، وہ کس طرح عمارت پر سائن بورڈ آویزاں کرسکتے ہیں۔ دوسری طرف آندھراپردیش وقف بورڈ کے عہدیداروں کا استدلال ہے کہ بورڈ کی تقسیم کے 6 ماہ گزرنے کے باوجود ابھی تک انہیں 50 کروڑ سے زائد کی رقم ادا نہیں کی گئی جو کہ ان کا حصہ ہے۔ لہذا وہ ایک راستہ پر اپنا بورڈ آویزاں کرنے کا حق رکھتے ہیں۔

TOPPOPULARRECENT