Thursday , August 24 2017
Home / شہر کی خبریں / عمارتیں جنہیں فائر این او سی کی ضرورت نہیں ہے

عمارتیں جنہیں فائر این او سی کی ضرورت نہیں ہے

18 میٹر اونچی یا پانچ فلورس تک کی رہائشی عمارتوں کے لیے این او سی درکار نہیں
حیدرآباد ۔ 18 ۔ فروری : ( ایجنسیز ) : بلڈنگ ریگولرائزیشن ( بی آر ایس ) اینڈ لے آوٹ ریگولرائزیشن ( ایل آر ایس ) اسکیمس کے نئے قواعد کے ساتھ تلنگانہ اسٹیٹ ڈیزاسٹر ریسپانس اینڈ فائر سروسیس ڈپارٹمنٹ نے ایسی عمارتوں سے متعلق ایک تفصیلی نوٹ پیش کیا ہے جنہیں فائر فائٹنگ ایکوپمـنٹ کی ضرورت نہیں ہے ۔ یہ وہ رہائشی بلڈنگس ہیں جنہیں غیر قانونی طور پر کمرشیل بلڈنگس میں تبدیل کیا گیا ہے اور انہیں ریگولرائزیشن طلب کرنے سے قبل ان کے موقف کو بدلنے کے لیے نو آبجکشن سرٹیفیکٹ ( این او سی ) حاصل کرنا ہوگا ۔ اگر بلڈنگس کو ہائی رائزس ۔ پانچ فلورس اور اس سے کم ( ہر فلور کی بلندی عام طور پر تین میٹر ہوتی ہے ) میں تقسیم کیا جاتا ہے تو 18 میٹر بلندی یا پانچ فلورس تک کی عمارتوں کے لیے این او سی کی ضرورت نہیں ہوگی ۔ دوسری عمارتیں جہاں اس کی ضرورت نہیں ہے وہ ہیں اسکولس ، کالجس اور دیگر تعلیمی ادارے جو 500 مربع میٹر سے کم رقبہ والے پلاٹ پر قائم کئے گئے ہیں اور 6 میٹر کی بلندی یا دو فلورس تک کی عمارتوں میں کام کررہے ہیں ۔ اسی طرح فنکشن ہالس ، سنیماس ، ملٹی پلکسیس ، مالس مع ملٹی پلکسیس اور مذہبی مقامات کے لیے بھی جو اسی قسم کے اسٹرکچرس کے مطابق ہیں ، آسانی ہوسکتی ہے ۔ مختلف آفسیس بنکس ، پروفیشنل ادارے جیسے آرکیٹکٹس ، انجینئرس ، ڈاکٹرس ، لائرس کے دفاتر ، پولیس اسٹیشنس ، لیابس ، لائبریریز ، کمپیوٹر انسٹالیشنس ، ٹیلی فون ایکسچینجس ، براڈکاسٹنگ اسٹیشنس اور ٹیلی ویژن اسٹیشنس کو بھی فائر سیفٹی قواعد پر عمل کرنے کی ضرورت نہیں ہے ۔ بشرطیکہ وہ 500 مربع میٹر کے پلاٹس پر اور دو فلورس یا اس سے کم عمارت میں قائم ہیں ۔ اسی کا اطلاق شاپس ، اسٹورس ، ویرہاوزس ، ڈپوز ، ٹرک ٹرمینلس ، گیریجس اور اس طرح کے یونٹس پر ہوتا ہے ۔ فائر ڈپارٹمنٹ کے عہدیداروں نے کہا کہ فائر ایکٹ 1999 کے سیکشن 13 کا اطلاق 18 میٹر سے زیادہ اونچائی والی عمارتوں ( پانچ فلورس سے زیادہ ) اور 15 میٹر سے زیادہ ( تین فلورس اور زائد ) کی کمرشیل بلڈنگس پر ہوتا ہے ۔ تاہم اگر تعلیمی ادارے ، آفسیس ، سنیماس ، ہاسپٹلس اور دیگر ادارے قائم کرتے ہوئے فائر این او سی حاصل کئے بغیر غیر مجاز طور پر رہائشی عمارتوں کو کمرشیل عمارتوں میں تبدیل کیا گیا تو ایسی صورت تو این او سی حاصل کرنے کی ضرورت ہے ۔ جس کے لیے درخواستیں یکم مارچ تک تمام می سیوا سنٹرس میں قبول کی جائیں گی ۔۔

TOPPOPULARRECENT