Thursday , September 21 2017
Home / کھیل کی خبریں / عمر اکمل کیخلاف ایک میچ کھیلنے پر امتناع

عمر اکمل کیخلاف ایک میچ کھیلنے پر امتناع

نیوزی لینڈ کیخلاف پہلے ٹوئنٹی 20 میں شرکت سے محروم ، طرز عمل تبدیل کرنے وقار یونس کا مشورہ

کراچی۔ 10 جنوری (سیاست ڈاٹ کام) پاکستانی بیٹسمین عمر اکمل 15 جنوری کو نیوزی لینڈ کے خلاف پہلا ٹوئنٹی 20 میچ نہیں کھیل پائیں گے کیونکہ آئی سی سی ڈریس کوڈ کی خلاف ورزی پر انہیں ایک میچ کیلئے امتناع کا سامنا ہے۔ پاکستان کے ہیڈ کوچ وقار یونس نے بتایا کہ پاکستان کرکٹ بورڈ (پی سی بی) نے عمر اکمل پر ایک میچ کیلئے امتناع عائد کردیا ہے کیونکہ انہوں نے گزشتہ سال قائد اعظم ٹرافی میچ کے دوران ضابطہ اخلاق کی خلاف ورزی کی تھی۔ میچ ریفری انور خان نے ایک کے بجائے 2 لوگو پہننے پر عمر اکمل کو دو مرتبہ خبردار کیا لیکن انہوں نے اس ہدایت کو نظرانداز کردیا۔ وقار یونس نے آج صبح قومی ٹیم کی نیوزی لینڈ روانگی سے قبل یہ بات بتائی۔ پاکستانی ٹیم کے مینیجر انتخاب عالم نے کہا کہ عمر اکمل نے آئی سی سی قواعد کی خلاف ورزی کی ہے۔ وقار نے کہا کہ اب وقت آگیا ہے کہ وہ اپنے رویہ میں تبدیلی لائیں اور مظاہرہ پر توجہ دیں۔ وہ 2009ء سے انٹرنیشنل کرکٹ میں ہیں اور انہیں کم از کم اس بات کا لحاظ رکھنا چاہئے کہ وہ ٹیم کا ایک مستقل حصہ بن چکے ہیں۔

انہوں نے کہا کہ عمر اکمل کا غیرضروری مسائل میں الجھنا ٹیم انتظامیہ کیلئے پریشان کن ہے۔ اس سے ان کے کرکٹ کریر کو مدد نہیں مل رہی ہے اور ساتھ ہی ساتھ انہیں کرکٹ پر پوری توجہ دینا کا موقع بھی نہیں مل رہا ہے۔ 2015ء ورلڈ کپ کے بعد وقار یونس نے پی سی بی کو رپورٹ پیش کرتے ہوئے یہ مشورہ دیا کہ وہ عمر اکمل اور اوپنر احمد شہزاد کو اس وقت تک منتخب نہ کریں جب تک ان کے طرز عمل میں تبدیلی نہ آئے اور وہ پابند ڈسپلین کھلاڑی بن جائیں، لیکن صرف ایک ٹورنمنٹ کے بعد قومی سلیکٹرس نے ان دو کھلاڑیوں کو پھر ٹیم میں شامل کرلیا۔ عمر اکمل نیوزی لینڈ میں ونڈے ٹیم کا حصہ نہیں ہیں اور انہیں صرف ٹوئنٹی 20 سیریز کیلئے شامل کیا گیا ہے۔ انتخاب عالم نے وضاحت کی کہ ایک میچ پر امتناع کا اطلاق انٹرنیشنل اور ڈومیسٹک دونوں میچس پر ہوتا ہے۔ اس کا بنیادی مقصد یہ ہے کہ عمر اکمل پر آئندہ میچ پر امتناع ہے اور یہ نیوزی لینڈ کے خلاف ٹوئنٹی 20 ہوگا۔

TOPPOPULARRECENT