Monday , August 21 2017
Home / Top Stories / عوامی صدر عبدالکلام کو قوم کا خراج عقیدت

عوامی صدر عبدالکلام کو قوم کا خراج عقیدت

NEW DELHI, JULY 28 (UNI):-President Pranab Mukherjee paying floral tribute to former President APJ Abdul Kalam in New Delhi on Tuesday. UNI PHOTO-82U

پارلیمنٹ کے اجلاس خراج عقیدت کے بعد ملتوی، آبائی مقام پر سرکاری اعزازات کے ساتھ کل تدفین

نئی دہلی 28 جولائی (سیاست ڈاٹ کام) قوم نے آج سابق صدرجمہوریہ اے پی جے عبدالکلام کو خراج عقیدت پیش کیا۔ سیاسی وابستگی سے بالاتر ہوتے ہوئے قائدین اور مختلف شعبہ ہائے حیات کے اہم شخصیات نے اُنھیں دھرتی ماتا کا ’’سچا سپوت‘‘ اور ایک ’’نایاب ہیرا‘‘ قرار دیا۔ صدرجمہوریہ پرنب مکرجی، نائب صدر حامد انصاری، وزیراعظم نریندر مودی اور کئی اہم شخصیات نے 83 سالہ عبدالکلام کو خراج عقیدت پیش کیا جن کی فانی باقیات شیلانگ سے یہاں منتقل کی گئی تھیں۔ اُن کا انتقال کل رات قلب پر زبردست حملہ کی وجہ سے ہوا تھا۔ اہم شخصیات نے اُن کی نعش پر پھولوں کے ہار چڑھائے۔ نعش ترنگے میں لپٹی ہوئی تھی اور پالن ٹکنیکل ایریا کے ٹارمٹ پر ایک شہ نشین پر رکھی گئی تھی۔ بعدازاں اسے خصوصی فضائی کے طیارہ سے گوہاٹی سے نئی دہلی منتقل کیا گیا۔ صدرجمہوریہ اور دیگر اہم شخصیات اُن کے احترام میں خاموشی سے کھڑے رہے۔ جبکہ فوج کے تینوں شعبوں نے سابق صدرجمہوریہ کی نعش کو خراج عقیدت پیش کیا

اور پھول نچھاور کئے۔ اُن کی نعش ایک توپ گاڑی پر رکھ کر اُن کی قیامگاہ 10 راجا جی مارگ منتقل کی گئی جہاں خراج عقیدت پیش کرنے عوام کا کثیر ہجوم تھا۔ صدر، نائب صدر اور وزیراعظم کی زیرقیادت اہم شخصیات کا ہجوم اُن کی راجا جی مارگ کی قیامگاہ پر پہنچا اور ہندوستان کے مقبول ترین صدر کو جنھیں حقیقی قوم پرست کہا جاتا تھا، پھول چڑھاکر خراج عقیدت پیش کیا۔ وزیر دفاع منوہر پاریکر، دہلی کے لیفٹننٹ گورنر نجیب جنگ، چیف منسٹر اروند کجریوال، فوج کے تینوں شعبوں کے سربراہ اور ہندوستانی فضائیہ کے مارشل 96 سالہ ارجن سنگھ ، سی پی آئی کے ڈی راجہ، کرکٹ کے افسانوی کھلاڑی سچن تنڈولکر اہم شخصیات میں شامل تھے جنھوں نے مرحوم صدرجمہوریہ کو خراج عقیدت پیش کیا۔ سابق صدر کی تدفین رامیشورم میں جو ٹاملناڈو میں اُن کا مقام پیدائش ہے، 30 جولائی کو پورے فوجی اعزازات کے ساتھ ہوگی۔

اُنھیں سرکاری اعزازات کے ساتھ سپرد خاک کیا جائے گا۔ جمعرات 11 بجے دن تدفین مقرر ہے۔ عبدالکلام کا خاندان جن کے بڑے بھائی متو محمد میراں مرکائر 99 سالہ نے اطلاع دی ۔قبل ازیں عبدالکلام کی نعش جو آئی آئی آئی شیلانگ میں قلب پر زبردست حملہ کی وجہ سے لکچر کے دوران گر پڑے تھے، فضائیہ کے ایک ہیلی کاپٹر کے ذریعہ گوہائی منتقل کی گئی جہاں چیف منسٹر آسام ترون گوگوئی نے خراج عقیدت پیش کیا۔ پارلیمنٹ اور کابینہ نے بھی خراج عقیدت پیش کیا۔ نائب صدر کانگریس راہول گاندھی نے پریس کانفرنس میں کہاکہ صدر عبدالکلام عوام کے صدر تھے۔ اُن میں ایسی صلاحیت تھی کہ ہندوستان کے نوجوانوں سے ربط پیدا کرتے تھے۔ ہمیں اُن کی، اُن کے انداز فکر کی اور اُن کی بصیرت کی کمی بُری طرح محسوس ہوگی۔ اُنھوں نے کہاکہ وہ اپنی زندگی کے آخری لمحہ تک کام کرتے رہے۔ یہی طریقہ اُنھوں نے زندگی بھر قائم رکھا اور ہمیں اُن پر فخر ہے۔

انتقال ناقابل تلافی نقصان: وی ایچ پی
وشوا ہندو پریشد (وی ایچ پی) نے آج کہاکہ سابق صدر اے پی جے عبدالکلام کے نقصان سے قوم کو ’’ناقابل تلافی نقصان ‘‘ پہنچا ہے۔ وی ایچ پی نے انہیں تمام افراد بشمول مسلمانوں کیلئے ایک مثالی نمونہ قرار دیا، جنہوں نے ملک اور اپنی برادری کی ترقی کیلئے جدوجہد کی تھی۔ اظہار تعزیت کرتے ہوئے اشوک سنگھل نے کہا کہ کلام ’’دھرتی کے لال‘‘ تھے، جن کو صدر جمہوریہ کے عہدہ پر فائز کرنے سے اس عہدہ کے وقار میں اضافہ ہوگیا۔ بین الاقوامی صدر پروین توگاڈیہ نے کہا کہ وہ غیر معمولی شخصیت تھے اورملک کے واحد سائنسداں تھے جو ملک کے اعلیٰ ترین عہدہ تک پہنچے۔ وی ایچ پی کے جوائنٹ جنرل سکریٹری سریندر جین نے کہا کہ اگر ملک کے مسلمانوں کو ترقی کرنا ہے تو انہیں عبدالکلام کو بطور مثالی نمونہ قبول کرنا ہوگا اور ملک اور اس کی ترقی کیلئے اپنی زندگی وقف کرنی ہوگی۔

TOPPOPULARRECENT