Thursday , August 17 2017
Home / شہر کی خبریں / عوامی مسائل اور حصول اراضیات پر اسمبلی و کونسل کے اجلاس پر زور

عوامی مسائل اور حصول اراضیات پر اسمبلی و کونسل کے اجلاس پر زور

چیف منسٹر کے سی آر کی فارم ہاؤز میں وقت گذاری پر تنقید ، محمد علی شبیر
حیدرآباد ۔ 16 جولائی (سیاست نیوز) قائد اپوزیشن تلنگانہ قانون ساز کونسل نے عوامی مسائل بالخصوص حصول اراضیات اور کسانوں کے مسائل کا جائزہ لینے کیلئے اسمبلی اور کونسل کا خصوصی اجلاس طلب کرنے کا ٹی آر ایس حکومت سے مطالبہ کیا۔ اسمبلی کے میڈیا کانفرنس ہال میں پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے یہ بات بتائی۔ اس موقع پر کانگریس کے ڈپٹی فلور لیڈر اسمبلی مسٹر ٹی جیون ریڈی، کونسل کے ڈپٹی لیڈر مسٹر پی سدھاکر ریڈی بھی موجود تھے۔ مسٹر محمد علی شبیر نے کہا کہ ریاست میں مسائل کے انبار ہے۔ انہیں حل کرنے کے بجائے چیف منسٹر کے سی آر فارم ہاؤز میں وقت گذاری کررہے ہیں۔ عوامی مسائل کا جائزہ لینے کیلئے حکومت سے فوری اسمبلی اور کونسل کا اجلاس طلب کرنے کا مطالبہ  کیا۔ انہوں نے کہا کہ اسمبلی اور کونسل کا چیف منسٹر کو احترام نہیں ہے۔ کانگریس کے دورحکومت کے دوران ایک سال میں 52 دن تک اسمبلی کا اجلاس طلب کرتے ہوئے عوامی مسائل کو حل کیا جاتا تھا لیکن ٹی آر ایس کے دورحکومت میں اسمبلی سیشن پہلے سال 25 دن دوسرے سال 21 دن تیسرے سال 17 دن تک طلب کیا گیا ہے۔ ٹی آر ایس حکومت نے کسانوں کے مسائل کو یکسر نظرانداز کردیا جس کی وجہ سے ابھی تک ریاست تلنگانہ میں 4 فیصلوں کو نقصان پہنچا ہے۔ حکومت نقصانات کی پابجائی کرنے میں پوری طرح ناکام ہوگئی۔ یکمشت قرضوں کی عدم اجرائی سے کسان مسائل کا شکار ہے اور بنکرس انہیں نئے قرضہ جات جاری کرنے سے انکار کررہے ہیں۔ 8,500 کروڑ میں صرف 2020 کروڑ روپئے حکومت کی جانب سے جاری کئے گئے ہیں۔ مسٹر محمد علی شبیر نے کہا کہ خشک سالی سے متاثرہ علاقوں میں راحت فراہم کرنے کیلئے مرکزی حکومت نے تلنگانہ کو 800 کروڑ روپئے جاری کئے ہیں مگر ٹی آر ایس حکومت نے کسانوں کو سبسیڈی بھی نہیں دی اور نہ ہی مرکزی و ریاستی اسکیمات کے ذریعہ کسانوں کو مالی تعاون بھی فراہم نہیں کیا گیا۔ قائد اپوزیشن تلنگانہ قانون ساز کونسل نے منظم سازش کے تحت زرعی شعبہ کو سبوتاج کرنے کا حکومت پر الزام عائد کیا۔ انہوں نے کہا کہ حصول اراضی کیلئے قانون 2013ء پر عمل کرنے کے بجائے ٹی آر ایس حکومت جی او 123 جاری کرتے ہوئے کسانوں کے مفادات کو نقصان پہنچا رہی ہے۔ کانگریس پارٹی ترقیاتی کاموں کے خلاف نہیں ہے۔ تاہم کسانوں کو نقصان پہنچانے کے خلاف ہے۔ اسمبلی و کونسل کا خصوصی اجلاس طلب کرتے ہوئے حکومت ان مسائل پر غور کرے۔

TOPPOPULARRECENT