Tuesday , October 24 2017
Home / اضلاع کی خبریں / عوام بنیادی سہولتوں سے محروم ، بہتر منصوبہ بندی کا فقدان

عوام بنیادی سہولتوں سے محروم ، بہتر منصوبہ بندی کا فقدان

کریم نگر مجلس بلدیہ کے عہدیداران اور عوامی نمائندوں کے دعوے کھوکھلے

کریم نگر /24 اگست ( سیاست ڈسٹرکٹ نیوز ) مجلس بلدیہ کارپوریشن ایک طرف کریم نگر کو صاف ستھرا خوش نما شہر بنانے کی کوشش کر رہی ہے کہتے ہو بیانات دے کر عوام سے تعاون کی خواہش کرتی ہے تو دوسری جانب کارپوریشن مسٹر سردار رویندر سنگھ یہ دعوی کرتے ہیں کہ شہر کے عوام کو بنیادی سہولتوں کی فراہمی کیلئے ہرممکنہ کوشش کی جارہی ہے۔ رکن اسمبلی گنگولا کملاکر رکن پارلیمنٹ ونود کمار شہر کو اسمارٹ سیٹیز میں شامل کئے جانے کے بارے میں اعلانات کرتے ہیں ۔ اس کی وجہ سے مجلس بلدیہ کو فنڈز حاصل ہوں گے اب کیا ملے کریم نگر کے شہریان کو کونسی سہولتیں فراہم کی جائیں گی ۔ فی الحال تو کریم نگرکے عوام کو مجلس بلدیہ کی جانب سے کوئی بھی سہولت فراہمن نہیں ہو رہی ہے ۔ شہر کی سڑکوں کی صورتحال انتہائی بدترین ہے ۔ شہر کے کسی بھی محلہ میں سڑک کی حالت ٹھیک نہیں ہے ۔ انڈر گراؤنڈ ڈرینج کیلئے کھدوائی اور تنصیب کے بعد جگہ جگہ گڑھے پڑے ہوئے ہیں ۔ ڈرینج میں کئی ٹن کچرہ بھرا ہوا ہے ۔ جس کی وجہ سے پانی کا بہاؤ نہ ہونے سے بارش ہوجانے پر یہ گندے نالے ابل رہے ہیں اور نشیبی علاقوں کے گھروں میں گندہ پانی بہہ کر آرہا ہے ۔ مکرم پورہ مسجد جعفری مسجد قباء کے آس پاس کے گھروں میں دوکانوں میں پچھلے ہفتہ ہوئی معمولی بارش کی وجہ سے پانی آکر کافی نقصان ہوچکا ہے ۔ اس محلہ کے کارپوریٹر ماجد نے بذات خود مجلس بلدیہ میں اس کی شکایت کی ہے ۔ ان کا کہنا ہے کہ مسجد جعفری سے کلکٹریٹ چوراہے تک تقریباً پانچ چھ فٹ چوڑی اور چھ سات فٹ گہری موری ہے جسے جگہ جگہ بند کردیا گیا ہے ۔ اس موری کو بلدیہ کی جانب سے تین مرتبہ تعمیر کیا گیا۔ اس دوران یہاں کے مکانات اور دوکانداروں کو تقریباً دو ماہ تک پریشانی ہوئی تھی ۔ لاکھوں روپئے خرچ کرنے کے باوجود اس موری کا کوئی فائدہ نہیں ہوا ۔ بعض جگہ مالکین جائیداد نے اپنے خرچ پر سلاب ڈال لئے ۔ کریم نگر میں ڈینگو اور دیگر بیماریوں کا قہر نازل ہوا تھا تو کلکٹر کی ہدایت پر اس وقت کے کمشنر بلدیہ نے موریوں کی صفائی کے بجائے اس پر ڈالے گئے سلاب ہی توڑ ڈالے تھے ۔ نمائندہ سیاست نے اس وقت کے کلکٹر دیپا کنٹھا سے مل کر کمشنر کی غلط کارکردگی سے واقف کروایا تھا ۔ بعد ازاں موریوں کی صفائی ، اپنے اپنے خرچ پر موریوں پر سلاب ڈالے گئے تھے ۔ اب موجودہ صورتحال بھی کچھ مجلس بلدیہ کمشنر کی کارکردگی بھی کچھ اسی طرح کی ہے ۔ کوئی منصوبہ بندی نہیں ہے ۔ مسٹر رویندر سنگھ کا کچھ بیان اور کمشنر کے وی رمنا چاری کا کچھ اور بیان مجلس بلدیہ کے ذمہ دار عہدیدار کی کارکردگی پر سوالیہ نشان؟ سیاسی قائدین کی اپنی آپ پیٹھ ٹھوکنے اور کے سی آر کی حکومت کی تعریف اس درمیان عوام پریشان کن حالات سے دوچار ہیں ۔ مثالی شہر واقعی کریم نگر گندگی کی مثال پیش کر رہا ہے ۔ البتہ جائیداد ٹیکس ،آبرسانی ٹیکس برابر وصول کئے جارہے ہیں ۔ پچھئے دس دنوں سے کمشنر مجلس بلدیہ مسٹر اے ای اور محلہ کے متعلقہ کارپوریٹر سے نمائندہ سیاست مسلسل ربط میں ہے اور مسجد جعفری محلہ مکرم پورہ اندرا گاندھی چوراہا سے کلکٹر چوراہا تک ڈرینج کی صفائی فوری کروائے جانے کیلئے کوشش کرنے کے باوجود ادھر تجارتی ادارہ جات اور مکانات میں عوام کی دشواریوں کی یکسوئی نہیں ہو رہی ہے ۔ 7 فٹ گہری پانچ سے چھ فٹ چوڑی موری پر سلاب بنادیا جائے ۔ کچھ مقامات پر پتھر ٹوڑکر غلاظت نکال کر ڈھیر بازو ڈال دیا گیا ہے ۔ اس کی منتقلی نہیں ہوئی ہے اور بعض جگہ گندگی کیچڑ نکالا ہی نہیں گیا ۔ صرف سلاب کے پتھر نکال کر چھوڑ دیا گیا ہے ۔ جہاں کا پانی وہیں رکا ہوا ہے ۔

TOPPOPULARRECENT